ابھی تک حکومت کی راہ میں رکاوٹ نہیں ڈالی مگر 30نومبر کے بعد حکومت چلانا ناممکن بنا دیں گے: عمران خان

ابھی تک حکومت کی راہ میں رکاوٹ نہیں ڈالی مگر 30نومبر کے بعد حکومت چلانا ناممکن ...
ابھی تک حکومت کی راہ میں رکاوٹ نہیں ڈالی مگر 30نومبر کے بعد حکومت چلانا ناممکن بنا دیں گے: عمران خان

  


ننکانہ صاحب(مانیٹرنگ ڈیسک)پاکستان تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان نے کہا ہے کہ دھاندلی کی تحقیقات پر ہماری تجویز آئینی اور حکومت کی طرف سے ہی پیش کردہ ہے، ہمارا احتجاج پر امن رہا ہے اور آج تک ہم نے حکومت چلانے کے راہ میں کوئی رکاوٹ نہیں ڈالی مگر 30 نومبر کے بعد آپ کی حکومت چلانا نا ممکن بنا دیں گے، ہم جانتے ہیں کہ کس کس ادارے نے دھاندلی میں آپ کی معاونت کی تھی اور کس چینل نے آپ کی دھاندلی پر پردہ ڈالا تھا، ساری پارٹیاں دھاندلی کا شور مچاتی ہیں مگر ہم اس دھاندلی کو بے نقاب بھی کریں گے۔ جلسہ عام سے خطاب میں انہوں نے کہا کہ مذاکرات کے دوران حکومت چھ میں سے پانچ مطالبات تو مان گئی تھی جس کا اعلان وزیر خزانہ اسحاق ڈار نے خود کیا تھا کہ صرف وزیر اعظم کے استعفے کا معاملہ باقی رہ گیا ہے مگر اب وہ کہتے ہیں کہ ہمارا مطالبہ آئین کے تحت نہیں ہے ، ڈار صاحب ! ہمارے پاس وہ کاغذات موجود ہیں جن پر آپ نے تحقیقاتی کمیشن کی معاونت کے لئے خفیہ اداروں کی شمولیت کا وعدہ کیا تھا۔کپتان نے بتایا کہ حکومت کی طرف سے مطالبہ کیا جا رہا تھا کہ ہمارا دھرنا ختم ہو گا اور پھر عام انتخابات میں دھاندلی کی تحقیقات کروائی جائیں گی مگر ہم نے ایک آئینی تجویز دی ہے کہ ہمارا دھرنا بھی جاری رہتا ہے اور دھاندلی کی تحقیقات بھی کر لی جاتی ہیں اگر دھاندلی ثابت ہو گئی تو پھر دوبارہ انتخابات کروانا ہوں گے۔ انہوں نے سوال کیا کہ آئین کے آرٹیکل 190کے تحت عدالت کسی بھی ادارے کو تحقیقات میں معاونت کا حکم دے سکتی ہے تو ہمارا مطالبہ کس طرح غیر آئینی ہو سکتا ہے؟ انہوں نے کہا کہ ہم نے گو نواز گو کی بات کی تو میاں صاحب اس بات کو غلط سمجھ گئے ہیں اور کبھی’گو چین‘اور کبھی ’گو جرمنی‘ کر رہے ہیں ، انہوں نے تو پوری دنیا کے دورے شروع کر دیئے ہیں اور وہاں جا کر بھی ہمارے دھرنے کو نہیں بھول رہے، میں ان کو بتانا چاہتا ہوں کہ میرا مطلب یہ ہر گز نہیں تھا بلکہ میں تو آپ کا استعفیٰ مانگ رہا تھا۔ عمران خان نے جلسے میں خواتین کی بڑی تعداد میں شمولیت پر ان کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ اس ملک میں خواتین سیاست میں حصہ کم لیتی ہیں مگر نیا پاکستان بنانے میں خواتین بڑھ چڑھ کر حصہ لے رہی ہیں، میں ان کے جذبے کو سلام پیش کرتا ہوں اور ان کی قربانیوں پر ان کا شکریہ ادا کرتا ہوں۔انہوں نے خطاب میں حکومت پر کرپشن اور اقرباء پروری کے الزامات بھی عائد کئے۔واضح رہے عمران خان نے 30 نومبر کو اسلام آباد میں بڑے احتجاجی مظاہروں کا اعلان کر رکھا ہے۔

مزید : قومی /اہم خبریں


loading...