30نومبر کاجلسہ، اسلام آباد انتظامیہ کا پنجاب پولیس بلانے کا فیصلہ

30نومبر کاجلسہ، اسلام آباد انتظامیہ کا پنجاب پولیس بلانے کا فیصلہ
30نومبر کاجلسہ، اسلام آباد انتظامیہ کا پنجاب پولیس بلانے کا فیصلہ

  

اسلام آباد(ویب ڈیسک) تحریک انصاف کے30 نومبر کے جلسے کیلئے اسلام آباد انتظامیہ اور پولیس نے سکیورٹی خدشات کے باعث پنجاب پولیس کی نفری طلب کرنے کا فیصلہ کر لیا۔ تین ماہ سے جاری دھرنے کا زور تو ٹوٹ چکا ہے اور مرکزی کرداروں میں سے ایک ڈاکٹر طاہر القادری دھرنے سے جاچکے ہیں مگر خاطر خواہ تعداد نہ ہونے کے باوجود عمران خان دھرنا ختم کرنے سے صاف انکاری ہیں۔ لاہور، رحیم یار خان اور ملتان میں بڑے جلسے کرنے کے بعد انہوں نے 30 نومبر کو اسلام آباد کے ڈی چوک میں تاریخی جلسہ کرنے کا اعلان کر رکھا ہے جس کی وجہ سے یقیناً حکومت اور ضلعی انتظامیہ کو فکر لاحق ہے کہ اگر عوام کی ایک بڑی تعداد یہاں تک آگئی تو کوئی بھی ناخوشگوار واقعہ ہوسکتا ہے۔

وزارت داخلہ اور دیگر قانون نافذ کرنے والے ادارے اس حوالے سے چوکس ہیں۔ معتبر ذرائع کے مطابق اس جلسے کے انتظامات اور سکیورٹی کے لئے اسلام آباد پولیس ناکافی ہے۔ اس لئے پنجاب پولیس کے ساتھ ایف سی کو بھی اضافی نفری کے طور پر طلب کرنے کا فیصلہ کرلیا گیا ہے۔

مزید :

اسلام آباد -