خیرات دینے اور دوسرے کی مدد کرنے میں دنیا کا کونسا ملک سب سے آگے ہے؟ فہرست میں پاکستانیوں کا نمبر کونسا ہے؟ ایسا انکشاف جس نے تمام اندازے غلط ثابت کردئیے

خیرات دینے اور دوسرے کی مدد کرنے میں دنیا کا کونسا ملک سب سے آگے ہے؟ فہرست میں ...
خیرات دینے اور دوسرے کی مدد کرنے میں دنیا کا کونسا ملک سب سے آگے ہے؟ فہرست میں پاکستانیوں کا نمبر کونسا ہے؟ ایسا انکشاف جس نے تمام اندازے غلط ثابت کردئیے

  

لندن (نیوز ڈیسک) مخیر اقوام کی عالمی رینکنگ جاری کرنے والے برطانوی ادارے چیرٹیز ایڈ فاﺅنڈیشن نے 2015ءکی رپورٹ جاری کردی ہے جس کے مطابق 145 ممالک میں پاکستان کا نمبر 94واں ہے جبکہ میانمر پہلی پوزیشن حاصل کرکے دنیا کی مخیر ترین قوم قرار پایا ہے۔

برطانوی ادارہ اقوام کے خیراتی رویے کا مطالعہ کرتا ہے اور اجنبیوں کی مدد، عطیات اور فلاحی کاموں کے لئے اخراجات کرنے جیسے عوامل کو مدنظر رکھ کر ہر سال ایک عالمی رینکنگ جاری کرتا ہے۔ اس سال کی فہرست میں میانمر کے بعد امریکا، نیوزی لینڈ، کینیڈا، آسٹریلیا اور برطانیہ کا نمبر آیا ہے۔ کم ترین خیرات کرنے والے ممالک میں چین، یمن، لتھوینیا شامل ہیں جبکہ دنیا بھر میں سب سے کم خیراتی رویے کا مظاہرہ کرنے والا ملک برونڈی ہے۔

مزید پڑھیں: ٹیپو سلطان کی سالگرہ،بھارتیوں کا احتجاج ،توڑ پھوڑ, نعرے بازی ،پولیس کا لاٹھی چارج ،ایک ہلاک

جنوبی ایشیا کے خطے میں سری لنکا کی پوزیشن سب سے بہتر رہی ہے جس کا نمبر 8واں ہے۔ بھوٹان کا نمبر 17 ، نیپال کا 76، افغانستان کا 84، اور بنگلہ دیش کا نمبر 95ہے۔ اس خطے میں سب سے کم خیرات کرنے والا ملک بھارت قرار پایا جس کا فہرست میں نمبر 106 ہے۔

World Giving Index کے نام سے جاری کی جانے والی اس رینکنگ میں کچھ دلچسپ رجحانات بھی سامنے آئے ہیں۔ اس رپورٹ کے مطابق مردوں میں خیرات کا جذبہ خواتین کی نسبت زیادہ پایاجاتا ہے، جبکہ دنیا کے 20 امیر ترین ممالک میں سے صرف 5 خیرات کرنے والے ٹاپ 20 ممالک میں شامل ہوسکے۔ تحقیق کاروں کا کہنا ہے کہ اس فہرست سے یہ بھی واضح ہوتا ہے کہ مادی وسائل اور خوشحالی سے مالا مال ممالک خیرات اور سخاوت میں غریب ممالک سے کافی پیچھے ہیں۔

مزید :

بین الاقوامی -