ریٹرننگ افسر کی غفلت ،لاہور میں 2کم عمر نوجوان بھی کونسلر بن گئے

ریٹرننگ افسر کی غفلت ،لاہور میں 2کم عمر نوجوان بھی کونسلر بن گئے

  

لاہور(محمد نواز سنگرا)ریٹرننگ افسر کی غفلت کے باعث لاہور میں 2کم عمر ’’نوجوان ‘‘بھی الیکشن جیت کر کونسلر بن گئے۔عوامی نمائندگی کے قانون1976کے تحت بلدیاتی الیکشن لڑنے کیلئے کونسلر کے امیدوار کی عمر کم از کم25سال ہونی چاہیے لیکن یو سی ایک وارڈ4اور 5سے الیکشن جیتنے والے کونسلر کم عمر امیدواروں کو ریٹرننگ افسر نے کلین چٹ دے دی۔وارڈ 4سے منتخب ہونے والے جنرل کونسلر سمیع اللہ ولد ہدایت الرحمٰن کی تاریخ پیدائش 25ستمبر1991ہے جس کے مطابق اس کی عمر24سال ایک ماہ اور6دن بنتی ہے جبکہ دوسرے محمد مختارولد مختار حسین کی تاریخ پیدائش 25اگست1993ہے جس کے مطابق پولنگ ڈے تک اس کی عمر 22سال2ماہ اور 6دن بنتی ہے ۔تفصیلات کے مطابق بلدیاتی الیکشن کیلئے جنرل کونسلر کا الیکشن لڑنے عوامی نمائندگی کے قانون1976کے تحت جنرل کونسلر کے امیدوار کی کم سے کم عمر 25سال ضروری ہے اس سے کم عمر امیدوار الیکشن میں حصہ نہیں لے سکتا جبکہ زیادہ عمر کی کوئی پابندی نہیں ہے۔کسی بھی الیکشن کیلئے امیدوار کو مختلف طریقوں سے چیک کیا جاتا ہے کہ وہ معیار پر پورا اترتا ہے یا نہیں جس کیلئے ایک باقاعدہ سکروٹنی کا عمل بھی رکھا گیا ہے تاکہ کوئی بھی نااہل شخص الیکشن نہ لڑ سکے۔اس کے باوجود لاہور کی یونین کونسل ایک ریٹرننگ افسر کی غفلت یا بدعنوانی کی وجہ سے وارڈ 4اور5میں دو ’’بچے‘‘بھی کونسلر بن گئی ہیں جن کی عمریں بالترتیب22اور 24سال ہیں۔ریٹرننگ افسر نے سیکروٹنی کے وقت امیدوار کو نااہل قراد دینے کی بجائے الیکشن لڑنے کی اجازت دے دی اور دونوں امیدوارمسلم لیگ(ن)کے ٹکٹ پر کونسلر بن گئے ہیں۔اس حوالے سے جب ڈسٹرکٹ ریٹرننگ آفیسر لاہور طاہر منصور خان نے سے بات کی گئی تو انہوں نے کہا کہ کام زیادہ تھا جس وجہ سے ریٹرننگ افسر کاغذات کی صحیح جانچ پڑتال نہیں کر سکا ۔غلطی ہو جاتی ہے اب الیکشن ٹریبونل میں اپیل دائر کی جائے تو ثابت ہونے پر کم عمر کونسلروں کو نااہل قرار دیدیاجائے گا اور مذکورہ وارڈوں میں دوبارہ الیکشن کروا دیا جائے گا۔جب اس بارے میں ریٹرننگ افسر یونین کونسل ایک بیگم کوٹ محمد اکرم سے بات کی گئی تو انہوں نے مؤقف دینے سے انکار کرتے ہوئے کہا کہ ابھی بات نہیں کر سکتا ۔

مزید :

صفحہ آخر -