پرویزمشرف غداری کیس کسی نتیجے پر نہیں پہنچے گا،معاملات آگے بڑھانا کسی کے مفاد میں نہیں: نجم سیٹھی

پرویزمشرف غداری کیس کسی نتیجے پر نہیں پہنچے گا،معاملات آگے بڑھانا کسی کے ...
پرویزمشرف غداری کیس کسی نتیجے پر نہیں پہنچے گا،معاملات آگے بڑھانا کسی کے مفاد میں نہیں: نجم سیٹھی

  

کراچی (ویب ڈیسک)سینئر تجزیہ کار نجم سیٹھی نے کہا ہے کہ پرویزمشرف غداری کیس کسی نتیجے پر نہیں پہنچے گا، تحقیقات چلتی رہیں گی، تاریخ پڑتی رہیں گی مگر اونٹ کسی کروٹ نہیں بیٹھے گا،پرویز مشرف غداری کیس کو آگے بڑھانا کسی کے مفاد میں نہیں ہے، حکومت چاہتی ہے مشرف غداری کیس آہستہ آہستہ چلتا رہے مگر کچھ دوستوں کا خیال ہے کہ یہ کیس ختم کردیا جائے،فوج ایک کل وقتی وزیر خارجہ چاہتی ہے۔

جیو نیوز کے پروگرام میں گفتگوکرتے ہوئے نجم سیٹھی کاکہناتھاکہ پرویز مشرف کی طرف سے غداری کیس میں دیگر لوگوں کے نام شامل کرنے کا مقصد مقدمہ کے فیصلے میں تاخیر کرنا تھا، عدالت کی طرف سے دوبارہ تحقیقات کے حکم سے پرویز مشرف کو ریلیف ملے گا،حکومت چاہتی ہے مشرف غداری کیس آہستہ آہستہ چلتا رہے مگر کچھ دوستوں کا خیال ہے کہ یہ کیس ختم کردیا جائے۔نجم سیٹھی نے کہا کہ میری چڑیا نے مجھے بتایا کہ فوج ایک کل وقتی وزیر خارجہ چاہتی ہے، اس پر میں نے چڑیا کو کہا کہ سرتاج عزیز کل وقتی وزیر خارجہ ہیں چونکہ وہ قومی اسمبلی کے ممبر نہیں ہیں اس لئے انہیں مشیر بنادیا گیا ہے۔ مگر چڑیا نے مجھے کہا کہ میری خبر کے مطابق سرتاج عزیز کے ساتھ طارق فاطمی بھی بیٹھے ہوئے اور کچھ کھینچا تانی کرتے رہتے ہیں، اس کے علاوہ فوج بھی اپنا وزیر خارجہ لگا کر بیٹھی ہوتی ہے، فوج کا اپنا بھی ایک نظریہ ہوتا ہے جو چیف آف جنرل اسٹاف ،آرمی چیف کہہ دیتے ہیں یا آئی ایس آئی کے ایکسٹرنل ونگ کے لوگ بریفنگ دیتے ہیں، اس وقت پانچ جگہوں پر خارجہ پالیسی کی اِن پ±ٹ ہورہی ہے جس میں فارن آفس، وزیراعظم ہاﺅس، سرتاج عزیز کے آفس، جی ایچ کیو اور آئی ایس آئی شامل ہیں۔ نجم سیٹھی نے کہاکہ فوج کی طرف سے نیشنل ایکشن پلان پر عملدآمد کے حوالے سے ایسے معاملات اٹھائے جاتے رہے ہیں جس کا تعلق سویلین حکومت سے ہوتا ہے، چوہدری نثار ماضی میں ان معاملات کی نشاندہی کرچکے ہیں جہاں سویلین حکومت کو کام کرنے کی ضرورت ہے، آئی ایس پی آر کی پریس ریلیز میں بھی انہی چیزوں کی طرف اشارہ کیا گیا ہے۔

مزید :

کراچی -