پاکستان کے شہروں میں 39 فیصد لوگ کرائے کے مکانات میں رہتے ہیں

پاکستان کے شہروں میں 39 فیصد لوگ کرائے کے مکانات میں رہتے ہیں
پاکستان کے شہروں میں 39 فیصد لوگ کرائے کے مکانات میں رہتے ہیں

  

لاہور(ویب ڈیسک) پاکستا ن سمیت دنیا بھر میں کرایہ داری کا رجحان بڑتا جا رہا ہے۔ پاکستان کے شہروں میں 39 فیصد لوگ کرایہ کے مکانات میں رہتے ہیں جبکہ سپین میں یہ شرح 71 فیصد ہے۔ سوئٹزر لینڈ میں یہ شرح 19 فیصد ہے۔ ان حقائق سے پردہ آفتاب اقبال نے اپنے پروگرام خبردار میں اٹھایا ۔ ان کا کہنا تھا کہ پاکستان میں اس رجحان کے بڑھنے کی بڑی وجہ دیہات سے لوگوں کا شہروں میں آنا اور شہروں میں زمین کی قیمتوں میں بے دریغ اضافہ ہے۔ مکان مالک اور کرایہ داروں کے لڑائی جھگڑے معمول بن چکے ہیں۔ مالک مکان منہ مانگے کرایہ کیساتھ ساتھ بھاری ایڈوانس بھی وصول کرتے ہیں۔ ضرورت اس امر کی ہے کہ حکومت ایڈوانس کی رقم مقررہ کرے۔ اس کے علاوہ کرایہ دار شاکی رہتے ہیں کہ مالک مکان مناسب وقت پر مرمت بھی نہیں کرواتے۔ مالکان کا گلہ ہے کہ کرایہ دار وقت پر کرایہ نہیں دیتے۔ پراگرام میں مزید بات کرتے ہوئے پراپرٹی ڈیلرز کے رول پر بھی روشنی ڈالی گئی۔ پراپرٹی ڈیلرز کی اکثریت صر ف کمیشن لینے تک ساتھ ہوتی ہے، کسی تنازع کی صورت میں مالک مکان کی سائیڈلی جاتی ہے کیونکہ ان کے مکان کو دوبارہ کرئے پر چڑھا کر کمیشن کھانا ہوتا ہے۔ پروگرام میں اس اہم بات پر بھی روشنی ڈالی گئی کہ مالکان کی بڑی تعداد پراپرٹی ٹیکس سے بچنے کیلئے کرایہ داروں کو اپنا رشتے دار بتا کر ٹیکس بچاتے ہیں۔

مزید :

لاہور -