پنجاب پولیس کے بعد اب چینی پولیس کے چرچے ،ایسا کیا ہوا کہ ایمنسٹی انٹرنیشنل کو بھی بولنا پڑ گیا۔۔۔

پنجاب پولیس کے بعد اب چینی پولیس کے چرچے ،ایسا کیا ہوا کہ ایمنسٹی انٹرنیشنل ...
پنجاب پولیس کے بعد اب چینی پولیس کے چرچے ،ایسا کیا ہوا کہ ایمنسٹی انٹرنیشنل کو بھی بولنا پڑ گیا۔۔۔

  

لندن (مانیٹرنگ ڈیسک)ملزموں اور عام لوگوں کے ساتھ پنجاب پولیس کا روا رکھا جانے والا سلوک اور غیر انسانی رویہ تو کسی سے ڈھکا چھپا نہیں ہے مگر اب پاکستان کے ہمسایہ اور برادر ملک چین کی پولیس کے طریقہ تفتیش کے حوالے سے ”ایمنسٹی انٹرنیشنل “کی ایک رپورٹ نے چینی پولیس کے غیر انسانی رویے کا پردہ چاک کر دیا ہے ۔ انسانی حقوق کی بین الاقوامی تنظیم ”ایمنسٹی انٹرنیشنل “نے تازہ رپورٹ جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ بیجنگ کی طرف سے فوجداری قوانین اور انصاف کے نظام میں حالیہ اصلاحات کے باوجود چینی پولیس کی طرف سے مشتبہ ملزموں سے اقبال جرم کروانے کے لیے تشدد کا مبینہ استعمال اب ایک معمول ہے۔ایمنسٹی انٹرنیشنل نے یہ رپورٹ انسانی حقوق کے درجنون وکلاءکے انٹرویوز کی بنیاد پر تیار کی ہے۔ واضح رہے کہ یہ رپورٹ ایک ایسے وقت سامنے آئی ہے جب اقوام متحدہ کی ایک ٹیم چین کے تشدد سے متعلق ریکارڈ کا جائزے لینے جارہی ہے۔امریکی خبر رساں ادارے کے مطابق لندن میںایمنسٹی انٹرنیشنل کے تحقیق کار پیٹرک پون کا کہنا ہے کہ "پولیس کے لیے کسی کو سزا دلوانے کے لیے اقبال جرم کروانا ایک آسان راستہ ہے ،تاہم یہ اقدمات موثر ثابت نہیں ہوئے ۔بیجنگ کی طرف سے تاحال ایمنسٹی کی اس رپورٹ پر کسی ردعمل کا اظہارنہیں کیا گیا۔

مزید :

بین الاقوامی -