صوبائی دارالحکومت، ہڑتالی ڈاکٹروں اور نرسوں کو دفعہ 144کی خلاف ورزی پر گرفتار کرنے کا فیصلہ

صوبائی دارالحکومت، ہڑتالی ڈاکٹروں اور نرسوں کو دفعہ 144کی خلاف ورزی پر گرفتار ...

  

لا ہور (جنر ل ر پو رٹر )میو ہسپتال لاہورکے ینگ ڈا کٹرز اور نرسوں کے مال روڈ کے اہم چوک کلب روڈ کو بند کئے چوتھا روز بھی گزر گیاجس کے باعث مر یضوں اور شہریو ں کو شدید اذیت کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے جبکہ دوسری جانب میو ہسپتال کے انہی ڈاکٹروں اور نرسوں کی ہڑتال کے باعث مر یضوں کی زند گیا ں خطر ے سے دوچا ر ہیں۔ ضلعی حکومت نے قانون شکنی کے مر تکب ان ہڑتال کرنے والے ڈاکٹروں کے خلاف دفعہ 144کی خلاف ورزی اور روڈ بلاک کرنے کے جرم میں بھی مقدمات درج کرنے کا فیصلہ کیاہے ۔یہ مقدمات ضلعی حکومت درج کروائے گی۔ تفصیلا ت کے مطا بق میو ہسپتال کے دو ڈاکٹروں اور ایک نرس کی برطرفی پر میوہسپتال لاہور کے ینگ ڈاکٹرزاور نرسیں گزشتہ 16دنوں سے احتجاج کررہے ہیں۔شروع میں یہ احتجاج ہسپتال کے اندر کیا گیا۔ہسپتا ل کے ان ڈور اور آؤٹ ڈور کے شعبے زبردستی بند کردیئے گئے۔لیکن مطالبات تسلیم نہ کئے جانے پر ڈاکٹروں اور نرسوں نے احتجاج کا دائرہ کار بڑھاتے ہوئے دودن مال روڈ تک ریلی نکالی۔پھر بھی حکومت نہ مانی تو مال روڈ کے کلب چوک میں دھرنا دیدیا۔جو کہ چوتھے روز میں داخل ہوگیا ہے۔ڈاکٹروں کے دھرنے کی وجہ سے مال روڈ کو ایک طرف سے ٹریفک کے لیے بند کردیا گیا ہے۔محکمہ صحت نے فیصلہ کیا ہے کہ ضلعی حکومت اور پولیس بھی ہڑتالی ڈاکٹروں اور نرسوں کے خلاف 6 مقدمات درج ہونے کے علاوہ بھی کارروائی کرے اور دفعہ 144کی خلاف ورزی کے ساتھ ساتھ روڈ بلاک کرنے کے جرم میں بھی مقدمات درج کروائے ۔واضح رہے کہ مال روڈ پر ہر طرح کے جلسے جلوس اور دھرنوں پر پابندی عائد ہے۔اور دفعہ 144نافذ ہے۔جبکہ قانون کے مطابق سٹرک کو زبردستی بلاک کرنا بھی سنگین جرم تصور کیا جاتا ہے۔

مزید :

صفحہ آخر -