برآمدات میں کمی کے تدارک کیلئے مختلف اقدامات اٹھا رہے ہیں‘ حسن اقبال

برآمدات میں کمی کے تدارک کیلئے مختلف اقدامات اٹھا رہے ہیں‘ حسن اقبال

  

ملتان( جنرل رپورٹر) وفاقی سیکرٹری ٹیکسٹائل انڈسٹری حسن اقبال نے کہاکہ برآمدات میں ہونے والی کمی پرحکومت کی گہری نظرہے اوراس کے تدارک کے لئے مختلف اقدامات اٹھارہے ہیں۔آل پاکستان بیڈشیٹ اینڈاپ ہولسٹری مینوفیکچرز ایسوسی ایشن (ایپبیوما)کے ظہرانے میں خطاب کرتے ہوئے انہوں نے مزیدکہاکہ ہماری برآمدات کا55فیصدحصہ سے زائد حصہ ٹیکسٹائل اوراس سے متعلقہ (بقیہ نمبر5صفحہ12پر )

سیکٹرز پرمشتمل ہے۔اس شعبہ کوحکومت کسی صوورت بھی نظرانداز نہیں کرسکتی۔حکومتی سطح پریہ احسا س ہے کہ بیرونی منڈیوں میں تجارت اورکاروباری تعلقات کوبڑھانے کیلئے ہمیں سب سے زیادہ ٹیکسٹائل اوراس سے متعلقہ ایس ایم ایز یاکاٹیج انڈسٹریز کوپروان چڑھاناہوگا۔سیکرٹری ٹیکسٹائل انڈسٹری نے کہاکہ ٹیکسٹائل اوراس سے منسلکہ سیکٹرز کے تحفظات اوران کے مسائل کے بارے میں ہم نے وزارت خزانہ ،ایف بی آر اورمنسٹری آف کامرس سے مسلسل رابطہ رکھاہے بلکہ بہت سے چیزیں ہم وزیراعظم کے علم میں بھی لائے ہیں ،انشاء اللہ جلد ہی آپ کے مسائل میں بہت کمی ہوگی۔انہوں نے کہاکہ بعدقسمتی سے پاکستان میں ٹیکس لینے اورٹیکس دینے کاصحیح کلچر پروان نہیں چڑھ سکا،ٹیکس لینا حکومتی اورملکی معاملات چلانے کیلئے بہت ضروری ہے تاہم ٹیکس گزاروں کو باعزت مقام دینا اوران کے تحفظات کودورکرنابھی اہم ہے ،امید ہے وقت گزرنے کے ساتھ ساتھ اداروں میں بہتری اورعوام کی سطح پربھی شعورآئے گا۔اس موقع پرخطاب کرتے ہوئے وائس چانسلر بہاؤالدین زکریایونیورسٹی ملتان پروفیسر ڈاکٹرطاہرامین نے کہاکہ ٹیکسٹائل انڈسٹری کوفوری توجہ کی ضرورت ہے یہ ہماری معیشت کی ریڑھ کی ہڈی ہے،تاہم اس کوجدید خطوط پراستوارہوناچاہیے۔انہوں نے کہاکہ ہم اس وقت سردجنگ کے دورسے گزررہے ہیں ہماری مشکلات بڑھ رہی ہیں ،دنیا کے معاشی نقشے پرپاکستان کواپین جگہ بنانے کیلئے بہت کچھ کرناہوگااوراس میں ٹیکسٹائل اوراس سے متعلقہ سیکٹرز کابڑاکردارہوگا۔ایپبیوماکے چیئرمین خواجہ محمدیونس ،سابق صدر سید عالم شاہ ودیگرممبران نے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ وزیراعظم کی طرف برآمدات کوزیرو ایٹڈکرنے کااعلان ہوالیکن اس پرعمل التواء کاشکار ہے اس کوجلد حل کرایاجائے۔ملتان کے ٹیکسٹائل کالج کے بورڈآف گورنرمیں وزارت ٹیکسٹائل کاایک آفیسرشامل کیاجائے۔برآمدکنندگان کے سیمپلز سٹیٹ کرانے کے اخراجات کا75فیصد جوحکومت نے اداکرناتھاکے سینکڑوں کلیمز ٹیڈیپ میں موجودہیں ان کی فوری ادائیگی کی جائے ،کساد بازاری کامقابلہ کرنے کیلئے کرنسی کی ویلیو کانئے سرے سے تعین کیاجائے اوربرآمدات میں ہونے والی کمی کی وجہ سے حکومت نے جو10 فیصدٹیکس لاگوکیاہے اس میں چھ فیصدکمی کی جائے ۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -