سی پیک منصوبہ بلدنے کی کوشش کی گئی تو ڈٹ کر مخالفت کرینگے :ایمل ولی خان

سی پیک منصوبہ بلدنے کی کوشش کی گئی تو ڈٹ کر مخالفت کرینگے :ایمل ولی خان

  

چارسدہ (بیورورپورٹ) بوٹ اور بندو ق کے زور پر سی پیک کی راہ بدلنے کی کو شش کی گئی تو سروں پر کفن باندھ کر نکلیں گے ۔ ہمارے اکابرین نے ملکی بقاء کیلئے تاریخی قر بانیاں دیکر حب الوطنی کا ثبوت دیا ہے ۔ ان خیالات کا اظہار عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی جوائنٹ سیکرٹری ایمل ولی خان نے اتمانزئی میں ورکرز کنونشن سے خطاب کر تے ہوئے کی ہے ۔ اس موقع پر سابق وزیر قانون اور اے این پی کے ضلعی صدر بیرسٹر ارشد عبداللہ اور ضلعی جنرل سیکرٹری محمد احمد خان نے بھی خطاب کیا ۔ ایمل ولی خان نے کہا کہ اٹھاویں آئینی ترمیم کی کامیابی ہمارے اکابرین کا مشن اور زندگی کا مقصد تھا ۔ ہم نے اٹھار ویں آئینی ترمیم پاس کراکے صوبائی حقوق کی پاسداری اور اکابرین کے خواہشات کی تکمیل کی ہے ۔ ہمارے پانچ سالہ دور حکومت میں اعلان شدہ ترقیاتی کاموں کو عملی جامہ پہنانا مثالی اور قابل تقلید ہے ۔ عبدالغفار خان بابانے اخوت ، بھائی چارے اور ملی یگانگت کے اسلامی زرین اصول اپنا کر حقیقی قائدانہ کر دار ادا کیااور اپنے عوام کے دلوں میں جگہ پیدا کیا ۔ انہوں نے کہاکہ بندو ق اور خود کش جیکٹ کے بل بوتے پر کوئی قائد نہیں بن سکتا اور نہ ہی دلوں پر راج کر سکتا ہے ۔ ہم مر حوم بابا کے عدم تشدد کے پیرو کار ہیں لیکن غیرت اور ناموس کا عملی نمونہ بھی ہے ۔ انہوں نے واضح کیا کہ پختونخوا کے مختلف علاقوں میں فوجی اپریشن شروع کرنے کیلئے ہم نے قدم بڑھایا اور جاری انتشار اور افراتفری کو ختم کیا ۔ سی پیک پر صوبائی حکومت کی کمزور موقف قابل شرم ہے ۔ مغربی روٹ پر فوج کو پختون کے حقو ق کے لئے غیر جانبدارانہ کر دار ادا کرنا چاہیے ۔اگر پنجاب حکومت نے بوٹ اور بندو ق کی زور پر پختونوں کے حقو ق پر ڈاکہ ڈالنے کی کو شش کی تو ہم مزاحمت کیلئے سب سے آگے ہو نگے ۔ انہوں نے صوبائی حکومت پر شدید تنقید کر تے ہوئے کہاکہ سی پیک جیسے اہم ایشو پر صوبائی حکومت کی سر د مہری اور عین موقع پر اسلام آباد میں ناچ گانے کا محفل سجانا حان صاحب کی حقیقت کی عکاسی ہے ۔ انہوں نے دھرنوں کے آڑ میں ڈھول باجے گاجے گھر سے لے جا کر ڈی جے بٹ کے خدمات سے میدان مزید گرم کرکے پختونوں کو تماشا بنایا ۔ اے این پی کے جیالے عملی کام کے قائل ہے اور پختونوں کے حقوق چھننے کیلئے پنجاب جا کر اپنا حق زبر دستی چھین لینگے ۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -