پٹرلیم مصنوعات کیلئے محفوظ ٹرانسپورٹ کے استعمال کا معاہدہ

پٹرلیم مصنوعات کیلئے محفوظ ٹرانسپورٹ کے استعمال کا معاہدہ

  

کراچی(اکنامک رپورٹر)آٹو موبائل کارپوریشن آف پاکستان (آٹو کام) کی جانب سے گزشتہ روز کراچی کے مقامی ہوٹل میں ’’سڑکوں سے پٹرولیم مصنوعات کی ترسیل کیلئے محفوظ ٹرانسپورٹ کے استعمال کے فروغ ‘‘ سے متعلق سیمینار میں آئل مارکیٹنگ کمپنیوں نے سڑکوں سے پٹرولیم مصنوعات کی ترسیل کیلئے محفوظ ٹرانسپورٹ کے استعمال کے فروغ کے معاہدے پر دستخط کئے ہیں۔معاہدے پر دستخط کرنے والی آئل مارکیٹنگ کمپنیوں میں پی ایس او،ٹوٹل،حیسکول،بائیکو اور شیل پاکستان شامل تھیں،اس سیمینار کا انعقاد حکومتی ریگولیٹری اتھارٹیز،سرکردہ آئل مارکیٹنگ کمپنیوں اور نامور قومی و غیر ملکی ماہرین کے اشتراک سے کیا گیا تھا۔ آٹو کام روڈ ٹرانسپورٹ سالوشنز کی وسیع رینج کا سرکردہ مینو فیکچررہے اور سڑکوں سے خطرناک اشیاء کی فراہمی میں استعمال ہونے والی گاڑیوں کو UN ADR معیار کے مطابق تیار کرتا ہے ،کمپنی کی تیار کردہ گاڑیاں ان مصنوعات کی فراہمی کیلئے محفوظ سپلائی چین مہیا کرتی ہیں،کمپنی کی تمام تر توجہ روڈ سیفٹی پر ہے اور اس ضمن میں کمپنی کی جانب سے متعدد اقدامات اٹھائے گئے ہیں،کمپنی نے روڈ سیفٹی کے اس فارمولے کے تحت حکومتی اتھارٹیز کے ساتھ ملکر سرکردہ مقامی اور غیر ملکی کمپنیوں میں محفوظ گاڑیوں کے استعمال کے فروغ کیلئے کام کیا ہے ۔سیمینار سے اپنے افتتاحی خطاب میں آٹو موبائل کارپوریشن آف پاکستان کے منیجنگ ڈائریکٹر خیام حسین سڑکوں سے پٹرولیم مصنوعات اور دیگر حساس کارگو کی ترسیل کیلئے محفوظ ٹرانسپورٹ کے استعمال کی اہمیت پر زور دیا،RTIRPC کے پروگرام منیجر امیر حسین نے سیمینار میں سڑکوں پر ہونے والے گڈز ٹرانسپورٹ کے حادثات کے اعداد و شمار پیش کئے،انہوں نے بتایا کہ محض کراچی میں سالانہ 30سے35ہزار روڈ ایکسیڈنٹ ہوتے ہیں،انہوں نے حادثات کی وجوہات اور ان سے بچاؤ کے طریقہ کار سے متعلق بھی بتایا،بعد ازاں اطالوی کمپنی Normec کے منیجنگ ڈائریکٹر Vittorio Molinonyنے ٹینکرز کیلئے درکار جدید ایکوئپمنٹ کے حوالے سے پریزینٹیشن دی،اس کے بعد GASSO اور SAF انٹرنیشنل نے ٹرانسپورٹ ایکوئپمنٹ کا ڈسپلے کیا،روڈ سیفٹی میں ریگولیٹرز کے کردار کے حوالے سے ایک پینل ڈسکشن کا بھی اہتمام کیا گیا تھا جس میں چیف پٹرول افسر نیشنل ہائیوے و موٹر وے پولیس نعیم اللہ،اوگرا کے محمد الطاف،وزارت مواصلات کے ڈاکٹر عمر مسعود قریشی اور انجینئرنگ ڈیولپمنٹ بورڈ کے سی ای او طارق اعجاز چودھری نے شرکت کی،سیمینار کی آخری پریزینٹیشن WABCO جرمنی کی مس سمعیہ مرتضیٰ کی جانب سے دی گئی جس میں انہوں نے گاڑیوں میں نئی ٹیکنالوجی کے استعمال کی ضرورت اور اہمیت سے متعلق بتایا اور کہا کہ الیکٹرانک بریکنگ سسٹم پٹرولیم ٹینکرز کو الٹنے سے محفوظ رکھنے میں اہم کردار ادا کرتا ہے ،سیمینار کے آخر میں آئل مارکیٹنگ کمپنیوں کے نمائندوں کی جانب سے سڑکوں سے پٹرولیم مصنوعات کی ترسیل کیلئے محفوظ ٹرانسپورٹ کے استعمال کے فروغ کے معاہدے پر دستخط کئے گئے،سیمینار کا اختتام خیام حسین کے اختتامی کلمات پر ہوا۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -