27نیٹو اتحادی ممالک نے افغانستان مزید فوج بھیجنے کی حامی بھر لی

27نیٹو اتحادی ممالک نے افغانستان مزید فوج بھیجنے کی حامی بھر لی

 واشنگٹن(اظہر زمان، بیورو چیف) نیٹو اور اس کے اتحادیوں نے افغانستان میں مزید تین ہزار فوج بھیجنے کا فیصلہ کیا ہے۔ برسیلز میں نیٹو ہیڈ کو ا رٹرز میں وزرائے دفاع کا اجلاس ختم ہو گیا ہے جس میں افغانستان مشن کمانڈر جنرل جان نکلسن کا مزید فوج بھیجنے کا مطالبہ منظور کر لیا گیا ہے ۔امریکی وزارت دفاع کی طرف سے ہفتے کے روز واشنگٹن میں جاری ہونیوالی اس اجلاس کی تفصیلات کے مطابق اسوقت افغانستان میں نیٹو اور اتحادیوں کے 39ممالک کی تیرہ ہزار فوج موجود ہے۔ مذکورہ اجلاس میں 27اتحادی ممالک مزید تین ہزار فوج بھیجنے پر رضا مند ہو گئے ہیں۔ آئندہ چند ماہ میں یہ فوج کابل پہنچ جائے گی جس کے بعد نیٹو اور اتحادیوں کی افغانستان میں موجود فوج کی تعداد سولہ ہزار ہو جائے گی۔ پینٹاگون پہلے ہی صدر ٹرمپ کی نئی افغان پالیسی کے مطابق فوج میں ساڑھے تین ہزار فوج افغانستان بھیجنے کا فیصلہ کر چکا ہے ۔ صدر ٹرمپ نے کانگریس کے نام تازہ مرا سلے میں بجٹ میں منظور شدہ رقم کے علاوہ مزید فنڈمانگا ہے، جس میں امسال کیلئے اضافی فوج کے اخراجات بھی شامل ہیں۔ کانگریس کے ارکا ن نے اضافی فنڈ فراہم کرنے کیلئے پہلے ہی رضا مندی کا اظہار کر چکے ہیں۔ اسوقت افغا نستان میں موجود امریکی فوج کی تعداد 8400ہے اور اس اضافے کے بعد افغانستان مین امریکی فوج کی تعداد تقریبا بارہ ہزار ہو جائے گی۔نیٹو کے سپریم کمانڈر جنرل کرٹس سیکپیروٹی نے وزرائے دفاع کے جلاس میں اضافے کے فیصلے پر اطمینان کا اظہار کیا۔ یاد رہے امریکہ میں نیٹو اور امریکی افواج براہ راست جنگ میں حصہ نہیں لیتی بلکہ جنگی تھیٹر میں افغان فورسز کی تربیت کے مشور ے اور دیگر تکنیکی امداد فراہم کرتی ہیں۔

نیٹو اجلاس

مزید : صفحہ اول

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...