اداروں کے درمیان ٹکراؤ ملک اور جمہوریت کیلئے خطرناک ہوگا، شاہ محمود

اداروں کے درمیان ٹکراؤ ملک اور جمہوریت کیلئے خطرناک ہوگا، شاہ محمود

ملتان( نیوز رپورٹر)وائس چئیرمین تحریک انصاف شاہ محمودقریشی نے کہا ہے کہ کرپشن کیخلاف مہم چلارہے ہیں،عمران خان سے کہا ہے کہ کرپٹ لوگوں کو ہمیں اپنی پارٹی میں شامل نہیں کرنا چاہیے ۔کراچی کی مہاجر کمیونٹی کا الطاف حسین کو مستردکرنا مثبت پہلو ہے ،آمریت کیخلاف صحافی برادری نے ہمیشہ مضبوط اورتوانا آ وازبلند کی ۔پنجاب بڑا صوبہ ہے وفاق کو متوازن رکھنے کیلئے پنجاب کی تقسیم ضروری ہے(بقیہ نمبر41صفحہ12پر )

۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روزمقامی میرج ہال میں پاکستان فیڈرل یونین آف جرنلسٹس(دستور)کے عہدیدران کے اعزازمیں دئیے گئے استقبالیہ سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔اس موقع پرپاکستان فیڈرل یونین آف جرنلسٹس (دستور)کے صدر نوازرضا،ایم این اے ملک عامرڈوگر،ایم یوجے کے سرپرست اعلی راؤشمیم اصغر،صدر ایم یوجے اشفاق احمد ودیگرنے بھی خطاب کیا۔عشائیہ کی تقریب سے خصوصی خطاب کرتے ہوئے شاہ محمودقریشی نے کہا کہ پانامہ کے بعد پیراڈائزڈ لیکس کا نام سامنے آ رہا ہے۔ پیراڈائزد لیکس میں بڑے بڑے لوگوں کے نام ہیں،3 تاریخ کو حدیبیہ پیپرز مل کے کیس کا آغاز ہو جائے گا۔انہوں نے کہا کہ آج ادارے زیر بحث ہیں، پاکستان میں اداروں پر تنقید بھی زیر بحث ہے، پاکستان کے اداروں پر کڑا امتحان ہے۔فوج بھی ملک کا اہم ادارہ ہے ، جب جمہوریت پرشب خون مارا گیا تو سب نے اس پرتنقید کی لیکن جب ادارہ عوامی امنگوں پر کام کرتا ہے تو اس کو سراہنا ضروری ہے، افواج پاکستان لائن آف کنٹرول پر کشیدہ حالات کے باوجود مغربی سرحد پر تاریخی کامیابیاں حاصل کیں، فوج کی کامیابیوں کا اعتراف دنیا کو کرنا چاہیے لیکن اداروں کے درمیان ٹکراؤ ملک اور جمہوریت کیلئے خطرناک ہوگا۔انہوں نے کہاکہ عدلیہ کی تاریخ کسی سے پوشیدہ نہیں، ایک باب عدلیہ کا وہ بھی ہے جس میں نظریہ ضرورت کا سہارا لیا گیا، آج یہ بات کہتے خوشی محسوس ہو رہی ہے، کہ عدلیہ آزادی کا اظہار کر رہی ہے، ریویو پٹیشن کے فیصلے پر جس طرح حملے کیئے گئے اس پر جو چیف جسٹس کا بیان آیا یہ بھی ایک تاریخ ہے، ہمارے ادارے میچور ہو رہے ہیں، فوج اور عدلیہ نئی سمت کا تعین کر رہے، جو کہ خوش آئند ہے۔انہوں نے کہا کہ انڈیا کا پنجاب آج تین حصوں میں تقسیم ہو چکا، جنوبی پنجاب کا خطہ بھی اپنی شناخت چاہتا ہے۔صحافی بھائی جنوبی پنجاب کے مسائل کے حل کیلئے اپنی قلم سے آوازاٹھائیں۔انہوں نے کہا کہ ایم کیو ایم اور پی ایس پی کے بارے میں انگلش میں ایک جملہ جو میڈیا پر کہ نہیں سکتا، پی ایس پی اور ایم کیو ایم ایک بات پر متفق دکھائی دیئے کہ ان سب نے الطاف حسین کی سوچ کو مسترد کیا،کراچی کی مہاجر کمیونٹی کا الطاف حسین کو مسترد کرنا مثبت پہلو ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ کہا کہ تحریک انصاف کو ملک بھر سے پذیرائی مل رہی ہے،سندھ نیشنل فرنٹ نے تحریک انصاف میں اپنے آپ کو ضم کیا ہے۔ملک بھر میں کامیاب جلسے منعقد ہورہے ہیں۔آج تونسہ شریف میں بھی طاقت کا مظاہرہ کیا جائے گا۔انہوں نے کہا کہ تقریب میں پی ٹی آئی رہنماؤں اعجازجنجوعہ،خالدجاوید وڑائچ،میاں جمیل،ڈاکٹراخترملک سمیت دیگر نے بھی شرکت کی جبکہ اس موقع پر پی ایف یوجے (دستور)کے جنرل سیکرٹری سہیل افضل خان،نائب صدرشکیل الرحمن حر،ایم یوجے کے صدراشفاق احمد،ممتازنیازی،مظہرجاوید،نویدانجم شاہ،رفیق قریشی ،ندیم حیدکراچی یونین آف جرنلسٹس(دستور)کے صدرشعیب خان ،ہمایوں عزیز،ہزارہ یونین آف جرنلسٹس (دستور)کے صدر محمدظاہرخان،جنرل سیکرٹری راجہ محمدخان،آرآئی یوجے (دستور)کے صدر مظہراقبال،جنرل سیکرٹری خاور نوازراجہ ،ایف یوجے(دستور) کے سجاد منا ودیگربھی موجود تھے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر