گرفتار سعودی شہزادوں کی عارضی جیل سے سامنے آنے والی تصاویر کی حقیقت سامنے آگئی

گرفتار سعودی شہزادوں کی عارضی جیل سے سامنے آنے والی تصاویر کی حقیقت سامنے ...
گرفتار سعودی شہزادوں کی عارضی جیل سے سامنے آنے والی تصاویر کی حقیقت سامنے آگئی

ریاض (ڈیلی پاکستان آن لائن) سوشل میڈیا پر کچھ تصاویر زیر گردش ہیں جنہیں سعودی عرب میں انسداد بد عنوانی کی کارروائیوں کے دوران گرفتار کیے گئے سعودی شہزادوں سے منسوب کیا جارہا ہے تاہم اب ان تصاویر کی حقیقت بھی منظر عام پر آگئی ہے اور انکشاف ہوا ہے کہ یہ شہزادہ ولید بن طلال نہیں بلکہ اردن کا ایک اداکار ہے جو ایک کامیڈی شو میں شہزادے کا کردار ادا کرتا ہے۔

تفصیلات کے مطابق انسدادِ بدعنوانی کی کارروائیوں کے دوران حراست میں لیے گئے سعودی شہزادوں کو دارالحکومت ریاض کے فائیو سٹار ہوٹل رٹز کارلٹن میں رکھا گیا ہے اور اسے ہی عارضی جیل کا درجہ دے دیا گیا ہے۔ اطلاعات تھیں کہ سعودی شہزادوں پر دورانِ حراست شدید تشدد کیا جا رہا ہے تاہم شہزادوں کی نئی تصاویر دیکھ کر لوگ حیران رہ گئے۔ تصویروں میں شہزادہ ولید بن طلال اور ایک اور قیدی پرسکون انداز میں اپنے گدوںپر لیٹے ہوئے مسکرا رہے ہیں جبکہ ان کے عقب میں دو شہزادوں کو دنیا و مافیہا سے بے خبر سوتے ہوئے بھی دیکھا جا سکتا ہے۔

سعودی عرب میں گرفتار کئے جانے والوں میں سے 7 لوگوں کو رہا کردیا گیا، یہ کون لوگ ہیں اور رہا کیوں کیا گیا؟ انتہائی حیران کن خبر آگئی

سوشل میڈیا پر ان تصاویر کو سعودی شہزادوں سے منسوب کیے جانے پر اردن کے میڈیا نے حقیقت بیان کی اور بتایا ہے کہ ان تصاویر کو پھیلانے والے شخص کا نام شربل خلیل ہے۔ شربل خلیل کا بھی کہنا ہے کہ تصویر میں نظر آنے والا شخص سعودی شہزادہ ولید بن طلال نہیں بلکہ اردن کا اداکار ہے جو ان کی ہدایتکاری میں بننے والے ٹی وی پروگرام ” الجدید“ میں سعودی شہزادے کا کردار ادا کر رہا ہے۔لبنانی میڈیا نے انکشاف کیا کہ شہزادہ ولید بن طلال جیسا نظر آنے والے شخص کا نام جان بو جدعون ہے ۔

مزید : عرب دنیا

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...