حکومت سے اختلافات پر بنگلہ دیش کے چیف جسٹس نے استعفیٰ دے دیا

حکومت سے اختلافات پر بنگلہ دیش کے چیف جسٹس نے استعفیٰ دے دیا
حکومت سے اختلافات پر بنگلہ دیش کے چیف جسٹس نے استعفیٰ دے دیا

کینبرا/ڈھاکہ(یوا ین پی)بنگلہ دیش کے چیف جسٹس نے حکومت سے اختلافات کے باعث استعفی دے دیا۔ جسٹس سرندرا کمار سنہا نے پارلیمنٹ کی جانب سے کی گئی آئینی ترمیم کالعدم قرار دے دی تھی۔

لندن ،ویسٹ فیلڈ شاپنگ سینٹر میں بھگدڑ مچ گئی، ایک شخص زخمی

میڈیا رپورٹس کے مطابق چیف جسٹس سرندرا کمار سنہا نے حکومت سے کئی اہم امور پر اختلافات کے بعد استعفی دیاہے ،انہوں نے 2014میں پارلیمنٹ کی جانب سے کی گئی آئینی ترمیم کو رواں سال کالعدم قرار دے دیا تھا۔ ترمیم کے مطابق اراکین پارلیمنٹ کو اعلی عدلیہ کے ججز کے خلاف کیسز کی جانچ پڑتال کا اختیار تھا جو چیف جسٹس سرندرا کمار سنہا نے کالعدم قرار دیاجبکہ اعلی عدلیہ کے اس فیصلے کے بعد سے حکمران جماعت عوامی لیگ چیف جسٹس کو شدید تنقید کا نشانہ بناتی آرہی تھی۔

عوامی لیگ کے کئی اہم لیڈران کی جانب سے چیف جسٹس پر کرپشن، اختیارات کے ناجائز استعمال، سیاسی امور میں مداخلت اور منی لانڈرنگ کے بھی الزامات لگائے گئے تھے۔واضح رہے کہ جسٹس سنہا اکتوبر میں جبری رخصت پر آسٹریلیا بھیج دیے گئے تھے جہاں سے انہوں نے اپنا استعفی بنگلہ دیشی صدر کو بھجوادیا ہے۔ جسٹس سرندرا کمار سنہا جنوری 2015سے چیف جسٹس کے عہدے پر فائز تھے اور ان کی مدت ملازمت جنوری 2018کو ختم ہو رہی تھی۔

مزید : بین الاقوامی

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...