ایف بی آر میں اصلاحات سے معیشت میں نئی جان پڑیگی ‘ اکانومی واچ

ایف بی آر میں اصلاحات سے معیشت میں نئی جان پڑیگی ‘ اکانومی واچ

اسلام آباد (اے پی پی) پاکستان اکانومی واچ کے چئیرمین برگیڈئیر (ر)محمد اسلم خان نے حکومت کی جانب سے ایف بی آر میں اصلاحات کے فیصلے کی بھرپور حمایت کرتے ہوئے کہاہے کہ حکومت کے اس فیصلے سے معیشت میں نئی جان پڑ جائے گی، ٹیکس گزاروں کی شکایات کا ازالہ ہو گا اور بیرونی قرضوں پر انحصار کم ہو جائے گا ۔اتوار کو یہاں جاری بیان میں انہوں نے کہا کہ ایف بی آر کو پالیسی سازی کے عمل سے دوراور اس کا کردار ٹیکس جمع کرنے تک محدود کرنا کاروباری برادری کا دیرینہ مطالبہ تھا جس پر اب عمل ہو گیا ہے ۔ٹیکس کے متعلق پالیسی سازی اب ٹیکس پالیسی بورڈ کرے گا جس سے شفافیت بڑھے گی۔اس وقت ڈائریکٹ ٹیکس کی شرح صرف اٹھارہ فیصد ہے جس سے ملک میں غربت بڑھ رہی ہے۔ ٹیکس پالیسی بورڈ اس صورتحال کو بہتر بنائے تاکہ دولت کی منصفانہ تقسیم کا عمل شروع ہو اور ٹیکس نیٹ پھیلے ۔انھوں نے کہا کہ سابقہ حکومت کی منفی پالیسیوں کی وجہ سے ٹیکس کا نظام غیر متوازن رہا جس سے دولت کا ارتکاز ہوا جبکہ ٹیکس گزاروں میں مایوسی پھیلی۔ اکانومی واچ کے صدر ڈاکتر مرتضیٰ مغل نے کہا کہ ٹیکس کے متوازن نظام کے بغیر ملکی ترقی یقینی بنانا اور کشکول توڑنا ناممکن ہے۔

مزید : کامرس