میک اپ بھی باقاعدہ ایک انڈسٹری ہے:آسیہ ناز

میک اپ بھی باقاعدہ ایک انڈسٹری ہے:آسیہ ناز
 میک اپ بھی باقاعدہ ایک انڈسٹری ہے:آسیہ ناز

  

لاہور(فلم رپورٹر)معروف بیوٹیشن آسیہ نازنے بتایاکہ فیشن انڈسٹری کی کامیابی میں سب سے زیادہ ہاتھ بیوٹیشن کا ہوتا ہے۔ایک سوال کے جواب میں آسیہ ناز نے کہاکہ پاکستان میں تقریباً ہر دوسری لڑکی بیوٹیشن بننے کی خواہاں ہے مگر باقاعدہ ٹریننگ سنٹر اور آگاہی نہ ہونے کی وجہ سے وہ اس کے بارے میں جزوی طور پر ہی جان پاتی ہیں جبکہ میک اپ باقاعدہ ایک انڈسٹری ہے اسے سیکھنے کے لیئے حکومتی سطح پر بڑے ٹریننگ سنٹرز ہونے چاہیئے اور اس کے ساتھ ساتھ غیر ملکی ماہرین کو بلا کر میک اپ کی باقاعدہ تربیت دلوائی جانی چاہیئے ۔آسیہ ناز نے کہاکہ حکومت مارکیٹ میں موجود دونمبر کاسمیٹکس کو بھی بند کروائے اور انکی جگہ باقاعدہ منظور شدہ کاسمیٹکس بیچی جائیں دو نمبر اور سمگل کی جانیوالی کاسمیٹکس اشیاء جن کا کوئی تصدیق شدہ سرٹیفکیٹ نہیں ہوتا اور وہ سستی ہونے کی بناء پر گلی محلوں میں کھلنے والے بیوٹی پارلرز اوردوکانوں پر مہنگے داموں سیل کی جارہی ہوتی ہیں اور باقاعدہ تصدیق نہ ہونے کی وجہ سے یہ بجائے خوبصورت بنانے کے لڑکیوں کے چہرے اور جلد کو داغدار کرتی ہیں اس لیئے جس طرح ادویات کی باقاعدہ منظوری لی جاتی ہے اور ان کے حکومت اور متعلقہ اداروں سے تصدیق کے سرٹیفکیٹ ہوتے ہیں بالکل اسی طرح ان کاسمیٹکس کی بھی باقاعدہ ادارں سے منظوری لی جائے اور پھر انہیں بیوٹی پارلرز اور دوکانوں پر فروخت کرنے کی اجازت دی جائے۔آسیہ ناز نے مذید کہاکہ باقاعدہ ٹریننگ ہونے کی وجہ سے بہت ساری لڑکیاں عمر بھر کی بدنمائی سے بچ سکیں گی اور شوق سے اس فیلڈ میں آنے کا سوچیں گی۔

مزید : کلچر