وزارت اوورسیز ، کرپٹ عناصر سے تنخواہوں کی واپسی کیلئے انکوائری کمیٹی قائم

وزارت اوورسیز ، کرپٹ عناصر سے تنخواہوں کی واپسی کیلئے انکوائری کمیٹی قائم

اسلام آباد(آن لائن)وزارت اوورسیز نے اپنے ذیلی اداروں او پی ایف، ای او بی آئی اور ڈبلیو ڈبلیو ایف میں ہونیوالی اربوں روپے کی کرپشن ، جعلی ڈگری ہولڈرزافسران و سٹاف اور بوگس بھرتیوں کیخلاف ایکشن لیتے ہوئے تمام تر مقدمات نیب اور ایف آئی اے کو بھجوانے کا فیصلہ کرلیا ہے ۔معلومات کے مطابق وزارت اوورسیز کے مشیر ذوالفقار بخاری نے وزارت کے ماتحت نجی ادارے جوکرپشن کی لت میں نہ صرف ملوث ہیں بلکہ کرپٹ افراد کو اعلیٰ عہدوں پر فائز اور ان کی کرپشن کو چھپانے کے لئے قوم کے مزید کروڑوں روپے خرچ کیے جانے کے ثبوت ملنے کے باعث ایک اعلیٰ سطحی انکوائری کمیٹی کا حکم دیا ہے ۔اوپی ایف میں ایم کیو ایم کے سابق رہنما فاروق ستار کے دور میں ہزاروں افراد کی نہ صرف بوگس بھرتیاں ہوئیں بلکہ ان میں درجنوں افراد ایسے ہیں جو اعلیٰ عہدوں پر جعلی ڈگری رکھنے کے باعث براجمان ہیں۔علاوہ ازیں او پی ایف کے سکول ، کالجز اور ہیڈ آفس میں بھی 257سے زائد افراد جعلی ڈگری پر ناجائز تنخواہیں وصول کررہے ہیں ۔متعدد افسران جعلی ڈگریوں پر پنشنز بھی وصول کرچکے ہیں ۔اوپی ایف میں پلی بارگین کرکے آنے والے ایک ایسے آفیسر کابھی انکشاف ہوا ہے جوکہ 90لاکھ سے اوپر نیب کو پلی بارگین کے ذریعے بحال ہوا اور سپریم کورٹ کے احکامات پر انہیں معطل کرکے ایک انکوائری کی گئی جس میں انہیں قرار واقعی سزا دینے کے ساتھ نوکری سے برخاست کرنے کی بھی سفارش کی گئی تھی لیکن اڑھائی سال گزرنے کے باوجود او پی ایف کی کرپٹ انتظامیہ نے کرپشن میں ملوث افسران کو تحفظ دیتے ہوئے ان کی اڑھائی لاکھ روپے ماہانہ تنخواہ باقاعدگی سے ریلیز کررہی ہے ۔ادھرای او بی آئی اور ڈبلیو ڈبلیو ایف میں اربوں روپے کی نہ صرف دھڑلے سے کرپشن کی گئی بلکہ ان کو ہضم کرنے کے لئے مزید کروڑوں روپے وار دیئے گئے اس پر بھی وزارت کے اعلیٰ مشیر نے ایکشن لیتے ہوئے ان کیخلاف مقدمات نیب کو بھجوانے کا حکم دیا ہے ۔واضح رہے کہ گزشتہ تین سالوں میں او پی ایف میں چند اہم عہدوں پر ایسے مرد وخواتین عہدیداروں کو بھرتی کیا گیا جن کی ماہانہ تنخواہ تین لاکھ سے اوپر ہے اور کام زیروبرابر ہے اس حوالے سے بھی ذوالفقار بخاری نے تحقیقاتی کمیٹی بنا کر ان سے نہ صرف تنخواہیں واپس لینے کا فیصلہ کیا ہے بلکہ ان کی بھرتی کی غیرشفافیت اور میرٹ کی دھجیاں اڑانے پر بھی مقدمہ نیب کو بھجوانے کا فیصلہ کیا ہے ۔

وزارت اوورسیز

مزید : صفحہ آخر