وزیراعلیٰ نے عوامی شکایات ریکارڈ کرانے کیلئے لاہور میں احتجاج گاہ کی منظوری دیدی

وزیراعلیٰ نے عوامی شکایات ریکارڈ کرانے کیلئے لاہور میں احتجاج گاہ کی منظوری ...

لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک) وزیراعلی پنجاب عثمان بزدار نے لندن کے ہائیڈ پارک کی طرز پر عوامی شکایات ریکارڈ کرانے کیلئے لاہور میں سپیکر کارنر یا احتجاج گاہ کی منظوری دی ہے۔ جہاں پر سرکاری اہلکار موجود ہوں گے اور شہریوں کی شکایات متعلقہ حکام تک پہنچائیں گے۔وزیراعلیٰ پنجاب نے لندن کے ہائیڈپارک کی طرز پر سپیکر کارنر بنانے کی تجویز کی منظوری دیدی۔ ابتدائی طورپر وزیراعلیٰ پنجاب کو ناصر باغ میں احتجاجی سپیکر کارنر بنانے کی تجویزپیش کی گئی ہے۔ کسی نے ا حتجاج کرنا ہو یاپھر کچھ کہنا ہو، احتجاج گاہ میں ہرطرح کی شکایت کے لئے آواز بلند کرنے کی اجازت ہوگی۔سپیکر کارنر میں سرکاری اہلکار موجودہوں گے جو شکایات متعلقہ حکام تک پہنچائیں گے، احتجاج گاہ کی شکایات پر وزیراعلیٰ سیکرٹریٹ سے فوری ایکشن ہوگا۔ ابتدائی طور پر لاہور کے ناصر باغ کو سپیکر کارنر بنانے کی تجویز ہے، جس کے حوالے سے جلد حتمی فیصلہ کر لیا جائے گا۔دوسری طرف وزیراعلی پنجاب عثمان بزدار نے کہا ہے کہ پنجاب میں حقیقی تبدیلی کیلئے موثر حکمت عملی پر عمل پیرا ہیں، عوام تبدیلی کے ثمرات سے مستفید ہو رہے ہیں،جب ادارے مضبوط ہوں گے تو لوگوں کو انصاف ملے گا۔وزیراعلی پنجاب نے کہا ہے کہ حقیقی معنوں میں عوام کی خدمت اوران کے مسائل کے حل کاعزم کررکھاہے،ہم سب نے مل کرچیلنجزکامقابلہ کرناہے جب ادارے مضبوط ہوں گے تولوگوں کوانصاف ملے گا،عوام تبدیلی کے ثمرات سے مستفید ہو رہے ہیں۔وزیراعلی عثمان بزدارنے لاہور ریلوے سٹیشن اور داتا دربار سمیت مختلف مقامات پر 5پناہ گاہیں تعمیرکرنے کا بھی اعلان کیا۔انھوں نے کہا کہ پناہ گاہوں کی تعمیر کا بنیادی مقصد لاہور آنے والے غریب افراد کو رات بسر کرنے کی سہولت فراہم کرنا ہے، پناہ گاہ بننے سے غریب آدمی کوسردی کے موسم میں کھلے آسمان تلے نہیں سونا پڑے گا، پائلٹ پراجیکٹ کے تحت لاہور میں 5 پناہ گاہ تعمیر کی جائیں گی، باقی 3 مقامات پر ایک ایک کنال اراضی پر پناہ گاہ بنیں گی۔

احتجاج گاہ

مزید : صفحہ اول