ڈپلو میٹک انکلیو اراضی کی غیر قانونی الاٹمنٹ سی ڈی اے کے کئی سینئر اہلکار، ٹھیکیدار گرفتار

ڈپلو میٹک انکلیو اراضی کی غیر قانونی الاٹمنٹ سی ڈی اے کے کئی سینئر اہلکار، ...

اسلام آباد (این این آئی)قومی احتساب بیورو(نیب) راولپنڈی نے تھرڈایونیو، ڈپلومیٹک انکلیو، اسلام آباد کی قیمتی 36 کنال اراضی کی غیرقانونی الاٹمنٹ کے الزام میں وفاقی ترقیاتی ادارہ (سی ڈی اے) کے سابق اورموجودہ سینئراہلکاروں اورٹھیکیدار کوگرفتارکرلیا۔ قومی احتساب بیورو کی طرف سے جاری بیان کے مطابق گرفتارکئے جانیوالے افسران میں سابق ڈائریکٹرشہری منصوبہ بندی غلام سرورسندھو، جن کی حال ہی میں ڈائریکٹرجنرل سے نائب ڈائریکٹرجنرل کے عہدے پرتنزلی کی گئی ہے اورسابق ممبر شہری منصوبہ بندی نصرت اللہ شامل ہیں۔ بیان کے مطابق غلام سرورسندھونے ویزہ درخواست گزاروں کیلئے سہولیات کی فراہمی اورشٹل سروس چلانے کا ٹھیکہ اپنے فرنٹ مین محمد حسین( کنٹریکٹر) کو دینے کیلئے ناجائزطریقے سے سمری میں حقائق پیش کئے، اس کے تحت 2008ء میں ٹھیکیدار کو سی ڈی اے کی قیمتی اراضی دوروپے فی گز سالانہ کے رینٹ کی شرح سے کرایہ پر دی گئی جس کیلئے ٹینڈر اوربولی کا عمل بھی منعقد نہیں کیا گیا جومتعلقہ حکومتی قواعد وضوابط کی سنگین خلاف ورزی ہے۔بیان کے مطابق کنٹریکٹر نے یہ اراضی اورسہولیات 2015ء تک استعمال کی اورڈپلومیٹک انکلیومیں ویزہ اوردیگردستاویزات کیلئے سفرکرنے والوں سے فی کس 500 روپے کی غیرقانونی وصولی کی ۔اسلام آباد ہائیکورٹ نے اس معاملے کا نوٹس لیتے ہوئے اس ٹھیکے کو غیرقانونی اوراپنے پیاروں کو نوازنے کی واضح مثال قراردیا تھا۔

غیرقانونی الاٹمنٹ

مزید : علاقائی