انجمن فیض الاسلام کے ذیلی ادارے بزم فیض الاسلام کے زیر اہتمام یوم اقبال کی تقریب

انجمن فیض الاسلام کے ذیلی ادارے بزم فیض الاسلام کے زیر اہتمام یوم اقبال کی ...

راولپنڈی (سٹی رپورٹر) انجمن فیض الاسلام کے ذیلی ادارے بزم فیض الاسلام کے زیر اہتمام یوم اقبال کی مناسبت سے انجمن کے تعلیمی و فنی تربیتی اداروں کے اساتذہ اور طلبہ کے مابین منعقدہ دو روزہ تقریری مقابلوں کی اختتامی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے مقررین نے کہا ہے کہ انڈیا میں بسنے والے مسلمانوں کی تعداد کسی بھی مسلمان ملک سے کم نہیں مگر ہندو اکثریت کے سمندر میں گم اور دبے ہوئے مسلمانوں کی حالت قابل رحم ہے جن کا انڈین سیاست ، سفارت یاکہیں اور ذکر تک نہیں ملتااور ان سے انتہائی بد تر سلوک روا رکھا جاتا ہے . اگر خدا نخواستہ پاکستان معرض وجود میں نہ آتا تو آج ہماری حالت بھی انڈین مسلمانوں سے مختلف نہ ہوتی . ہمیں ضرورت ہے کہ بانیان پاکستان کی سوچ اور فکر سے جڑ جائیں اور اپنے وطن کی تعمیر و ترقی میں مثبت اور فعال کردار ادا کریں . فکر اقبال کو ہماری تحریروں اور تقریروں سے باہر نکل کر اعمال کو سنوارنا چائییے جس کے لئے ہمیں اقبال کے پیغام کو سمجھنے اور اپنی عملی زندگیوں میں لاگو کرنے کیلئے جدوجہد اور محنت کی ضرورت ہے .تقریب کی صدارت شاعر و دانشور کرنل (ر) میاں جمیل اطہر نے کی جبکہ مہمان خصوصی صدر انجمن محمد صدیق اکبر میاں تھے . ماہر اقبالیات ، معروف صحافی اور دانشور ڈاکٹر زاہد حسن چغتائی نے تقریب میں خصوصی شرکت کی .انجمن کے جنرل سیکریٹری راجا فتح خان ، بزم فیض الاسلام کے چئیر مین پروفیسر نیاز عرفان ، پروفیسر رفیق چوہان ، محمد اکمل اور انجمن کے تعلیمی و فنی تربیتی اداروں کے اساتذہ اور طلبہ کی بڑی تعداد بھی اس موقع پر موجود تھی . ان تقریری مقابلوں کے بارے میں بزم فیض الاسلام کے چئیرمین پروفیسر نیاز عرفان نے بتایا کہ ہم نے اساتذہ کے علاوہ طلبہ کو اپنی تقریریں خود تیار کرنے کا پابند کیا تھا جس کا مقصد بچوں میں تخلیقی صفات کو اجاگر کرنا تھا . کرنل (ر) میاں جمیل اطہر نے مفکر پاکستان کو منظوم خراج عقیدت پیش کیا جبکہ صدر انجمن محمد صدیق اکبر میاں نے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ڈاکٹر علامہ محمد اقبال نے بطور شاعر ، مدبر اور سیاستدان اپنے آفاقی پیغام کے ذریعے مسلمانوں کو خواب غفلت سے جھنجھوڑا اور متحدہ ہندوستان کے مسلمانوں کے فکر وعمل کی آبیاری اور الگ وطن کا تصور دے کر ان کی راہنمائی کی . انہوں نے کہا کہ انجمن فیض الاسلام کے زیر اہتمام قومی مشاہیر کے ایام پوری تزک و احتشام کے ساتھ منائے جاتے ہیں جن کا مقصد بچوں کو ان کی قومی خدمات کا شعور و ادراک دینا ہوتا ہے . ڈاکٹر زاہد حسن چغتائی نے اپنے خطاب میں علامہ ڈاکٹر محمد اقبال کی شخصیت کے ہمہ جہت پہلوؤں پر اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ اقبال کے پیغام کو ہم نے سمجھنے اور اس عمل کرنے کی بجائے اسے محفلوں کو سجانے اور سر دھننے تک محدود کر دیا ہے جو اقبال کے ساتھ بہت بڑی زیادتی ہے اور ہماری بد قسمتی ہے . انہوں نے کہا کہ ہمیں اپنے دلوں اور دماغوں کو پیغام اقبال کے اصل مقصد کی طرف لانا ہوگا جو عمل کی تحریک دے کر ہماری دنیا اور آخرت کو سنوارنے کی راہ دکھاتا ہے . اس سے قبل اساتذہ اور طلبہ نے مفکر پاکستان کی شخصیت کے مختلف پہلوؤں پر تقاریر کیں . بچوں نے کلام اقبال بھی سنایا . تقریری مقابلوں میں حصہ لینے والے اساتذہ اور طلبہ کی سرٹیفکیٹس بھی دئیے گئے .

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر