پاکستان میں امیر اور غریب کے درمیا ن طبقاتی فرق بڑھنے لگا : ورلڈ بینک

پاکستان میں امیر اور غریب کے درمیا ن طبقاتی فرق بڑھنے لگا : ورلڈ بینک

کراچی(خصوصی رپورٹ )ورلڈبینک نے کہاہے کہ پاکستان میں امیراور غریب کے درمیان طبقاتی فرق بڑھنے لگا، دیہات میں 80فیصد آبادی خط غربت سے نیچے زندگی گزارنے پر مجبور ہے، بلوچستان میں 62فیصد، سندھ میں 30فیصد،خیبرپختون خوا میں 15اور پنجاب میں13فیصد آبادی خط غربت سے نیچے زندگی بسرکررہی ہے۔ورلڈ بینک کی تازہ ترین رپورٹ کے مطابق شہری کے مقابلے میں دیہی علاقوں میں اب تک صحت سمیت دیگر بنیادی سہولیات ناپید ہیں، 80فیصد دیہی آبادی غربت کی لکیر سے نیچے زندگی گزاررہی ہے۔ پاکستان میں پانی کی فراہمی، صحت و صفائی اور غربت کے عنوان سے اپنی رپورٹ میں ورلڈ بینک نے کہاہے کہ سب سے زیادہ بلوچستان کی 62 فیصد آبادی خط غربت سے نیچے زندگی بسرکررہی ہے۔سندھ میں 30جبکہ پنجاب اور خیبرپختونخوا میں بالترتیب 13 اور15 فیصد پاکستانی غربت کی لکیر سے نیچے زندگی گزاررہے ہیں۔ رپورٹ کے مطابق ضلع ایبٹ آباد میں شرح غربت سب سے کم 5.8 جبکہ بلوچستان کے ضلع واشک میں سب سے زیادہ 72.5 فیصد ہے۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر