جندول ، سرکاری لیز کے ہزاروں کنال سرکاری اراضی پر غیر قانونی تعمیرات جاری

جندول ، سرکاری لیز کے ہزاروں کنال سرکاری اراضی پر غیر قانونی تعمیرات جاری

جندول (نمائندہ پاکستان)سب ڈویژن جندول تحصیل ثمرباغ یونین کونسل صدبرکلی میں ممنوعہ سرکاری لیز کے ہزاروں کنال سرکار ی زمین پر غیر قانونی تعمیرراتی کام جاری زمیندارں نے زمین پر قبضہ کرنے کیلئے بڑے بڑے پختہ گھر اورسینکڑوں مارکیٹوں تعمیرکرنے کہ علاوہ زمیندار کئی سالوں سے زمینوں کی خرید وفروخت میں بھی مصروف رہتے ہیں جس پر تحصیل انتظامیہ کے علاوہ ضلع انظامیہ سمیت صوبائی انتظامیہ بھی خاموش تماشائی بن گئی ہیں تفصلات کہ مطابق ولیج ناظم وحیداللہ ، کونسلر سفیرملک ، حاجی فردول خان ملک ، نے میڈیا کو بتایا کہ یونین کونسل صدبرکلی میں ہزاروں کنال سرکاری زمین مقامی زمیداروں نے اس شرط پر ضلعی حکومت سے تحریری معاہدہ کرکے لیزپر حاصل کر رکھی تھی کہ لیز حاصل کرنیوالے زمیندار زمینوں پرتعمیراتی کام نہی کرئنگے ،اورنہ ہی زمین کی شکل وشباحت تبدیل کرینگے ،تااہم گزشتہ کافی عرصہ سے مزکورہ زمینوں پر تعمیراتی کام زور شور کیساتھ جاری ہیں اور زمین پر قبضہ مضبوط کرنے کی لئے زمینداروں نے سرکاری لیز کی زمین پختہ گھراور دوکانات تعمیر کررکھے ہیں انہونے مزید کہا کہ اب تک صدبرکلی،شینہ سخاڈنڈاور دیگر علاقوں میں ساٹھ فیصد سرکاری لیز کی زمینوں پر زمینداروں نے قبضہ کیا ہے انہونے کہا کہ ہم نے کئی بار صوبائی وئبسائڈ سٹیزن پورٹل پر شکایات درج کرلیا ہے جسکا کوڈ نمبر code;26731 ۔رجسٹرشن تاریخ 21/3/2017 جس پر اب تک کوئی عملی کام نہی ہوا ہے تاہم انہونے مزید کہا کہ ہم نیاء صوبائی حکومت سے پرزور مطالبہ کرتے ہیں کہ وہ جندول انتظامیہ سے ہزارو کنال سرکاری لیزکی زمینوں کا مکمل ریکاڈ طلاب کریں اور اس بزنس میں ملویث افسران کے خلاف سخت قانونی کاروئی کرے ؛

مزید : پشاورصفحہ آخر