پاکستان میں ٹی بی کو کنٹرول کرنے کیلئے 1340 مراکز قائم

پاکستان میں ٹی بی کو کنٹرول کرنے کیلئے 1340 مراکز قائم

لاہور (پ ر) پاکستان میں ٹی بی کو کنٹرول کرنے کیلئے 1340 مراکز قائم کئے گئے ہیں اور ان مراکزمیں گزشتہ پانچ سالوں کے دوران 16 لاکھ 61 ہزار 961 ٹی بی کے مریض رجسٹرڈ ہوئے ہیں۔ جبکہ 11 لاکھ 95 ہزار 247 مریضوں کا علاج کیا گیا ہے۔ نجی اور سرکاری 33 ٹرثری کیئر ہسپتالوں میں تپ دق کی روک تھام کیلئے ادویات کا انتظام کیا گیا ہے۔ آن لائن کے پاس دستیاب دستاویزات کے مطابق ملک بھر میں بائیو سیفٹی لیبارٹریاں ‘ لیول II اور III قائم کی گئی ہیں تاکہ تپ دق کا محفوظ اور معیاری تشخیص کی جاسکے مفت اور معیاری اینٹی ٹی بی ادویات پر ٹی بی سروس آؤٹ لیٹ پر بغیر کسی رکاوٹ کے فراہم کی جارہی ہیں۔ اور ٹی بی کو کنٹرول کرنے کیلئے اس وقت ملک میں 1340 مراکز قائم کئے گئے ہیں سب سے زیادہ مراکز پنجاب میں 566 ہیں‘ سندھ میں 270 ‘ کے پی کے میں 261 ‘ بلوچستان میں 122 ‘ آزاد جموں و کشمیر میں 63 ‘ فاٹا میں 27 گلگت بلتستان میں 44 اور وفاق میں 9 مراکز قائم کئے گئے ہیں ۔ 2013 ء میں ٹی بی کے دو لاکھ 96 ہزار 743 کیس رجسٹرڈ ہوئے ہیں ان میں سے دو لاکھ 74 ہزار 812 لوگوں کا علاج کیا گیا اور 93 فیصد علاج کامیاب رہا 2014 ء میں تین لاکھ 8 ہزار 213 کیس رجسٹرڈ ہوئے ہیں ان میں سے دو لاکھ 87 ہزار 45 لوگوں کا علاج کیا گیا اور علاج 93 فیصد کامیاب رہا۔ 2015 ء میں تین لاکھ 22 ہزار 977 کیس رجسٹرڈ ہوئے جن میں سے تین لاکھ ایک ہزار 727 لوگوں کا علاج ہوا 2016 ء میں تین لاکھ 65 ہزار 131 کیس رجسٹرڈ ہوئے ہ یں ان میں تین لاکھ 31 ہزار 663 لوگوں کا علاج ہوا ہوا 91 فیصد علاج کامیاب رہا ۔ 2017 ء میں تین لاکھ 68 ہزار 897 ٹی بی کے کیس رجسٹرڈ ہوئے ہیں لیکن علاج کتنوں کا ہوا اس حوالے سے ابھی کوئی ریکارڈ نہیں ملا۔ (عابد شاہ/طارق ورک)

مزید : میٹروپولیٹن 1