سندھ میں ہندو کمیونٹی کی جائیدادوں پر قبضے سے متعلق کیس،سپریم کورٹ نے15 دن میں رپورٹ طلب کر لی

سندھ میں ہندو کمیونٹی کی جائیدادوں پر قبضے سے متعلق کیس،سپریم کورٹ نے15 دن ...
سندھ میں ہندو کمیونٹی کی جائیدادوں پر قبضے سے متعلق کیس،سپریم کورٹ نے15 دن میں رپورٹ طلب کر لی

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)سپریم کورٹ آف پاکستان نے سندھ میں ہندو کمیونٹی کی جائیدادوں پر قبضے سے متعلق کیس میں 15 دن میں رپورٹ طلب کر لی ۔

تفصیلات کے مطابق چیف جسٹس ثاقب نثار کی سربراہی میں بنچ نے سندھ میں ہندو کمیونٹی کی جائیدادوں پر قبضے سے متعلق کیس کی سماعت کی،تحریک انصاف کے رکن اسمبلی رمیش کمار اور دیگر عدلات میں پیش ہوئے ۔رکن قومی اسمبلی رمیش کمار نے عدالت کو بتایاکہ کمیٹی نے کچھ جائیدادوں کی نشاندہی کی ہے،لاڑکانہ سے 45 درخواستیں موصول ہوئیں، لاڑکانہ ڈویژن کے علاوہ بھی قبضوں سے متعلق درخواستیں ہیں،چیف جسٹس ثاقب نثار نے کہا کہ ہم کمیٹی کا دائرہ کار بڑھا دیتے ہیں، بنیادی طور پر ہم نے ڈاکٹر بھگوان داس کی بیگم کی شکایت پر نوٹس لیا تھا،ڈاکٹر بھگوان داس کی بیگم کی شکایت پررپورٹ ہمیں 15 دن میں چاہیے۔

ایڈووکیٹ جنرل سندھ نے کہا کہ ڈاکٹر بھگوان داس کے کئی مقدمات ہائیکورٹ میں چل رہے ہیں،چیف جسٹس پاکستان نے کہا کہ اس معاملے میں کمیٹی کی دستخط شدہ رپورٹ چاہیے،عدالت نے رپورٹ جمع کرانے کیلئے15دن کاوقت دیتے ہوئے سماعت 30نومبرتک ملتوی کردی۔

مزید : قومی /علاقائی /اسلام آباد