اداکار سورج پنچولی نے اداکارہ جیا خان کی خودکشی پر خاموشی توڑ دی

اداکار سورج پنچولی نے اداکارہ جیا خان کی خودکشی پر خاموشی توڑ دی
اداکار سورج پنچولی نے اداکارہ جیا خان کی خودکشی پر خاموشی توڑ دی

  

ممبئی (این این آئی)بولی وڈ اداکار سورج پنچولی نے اپنی سابق گرل فرینڈ اور اداکارہ جیا خان کی مبینہ خودکشی کے معاملے پر برسوں بعد خاموشی توڑ دی ہے۔خیال رہے کہ جیا خان نے 2013 میں خود کو پھندہ لگا کر خودکشی کرلی تھی اور اپنے آخری خط میں سورج پنچولی پر زندگی تباہ کرنے کا الزام عائد کیا تھا۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق سورج پنچولی نے انسٹاگرام پر ایک طویل پوسٹ میں اپنے خلاف 2013 سے چل رہے جیا خان خودکشی کیس پر بات کی۔اداکار کے خلاف رواں سال کے آغاز میں جیا خان کی خودکشی پر فرد جرم عائد کی گئی تھی۔سورج پنچولی نے لکھا کہ وہ اس بارے میں کیس کے خاتمے پر بات کرنا چاہتے تھے مگر چونکہ مقدمہ توقعات سے زیادہ لمبا ہوگا تو انہوں نے اپنے خیالات سوشل میڈیا پر شیئر کرنے کا فیصلہ کیا۔اداکار کا کہنا تھا کہ انہوں نے عدالت میں مقدمے کا سامنا تحمل اور احترام سے کیا، انہیں ایک قاتل، مجرم اور تشدد کرنے والا کہا گیا، جس نے انہیں اور خاندان کو افسردہ کردیا، مگر توقع ہے کہ مقدمے کا اختتام انصاف کے ساتھ ہوگا۔اداکار نے اس مشکل میں ان کا ساتھ دینے الوں کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ جب یہ کیس شروع ہوا تو وہ بہت کم عمر تھے اور زندگی کو سمجھنے کی کوشش کررہے تھے میں کسی کو برا بھلا کہنے پر الزام نہیں دے سکتا کیونکہ میڈیا نے انہیں میری شخصیت کو ایسے ہی دکھایا تھا، مگر میں عفریت نہیں جیسا مجھے دکھایا جاتا ہے۔

انہوں نے کہاکہ میں جانتا ہوں کہ کسی کو بدترین سمجھنا بہت آسان ہے مگر خود کو بے گنا ثابت کرنا بہت مشکل ہے کیونکہ اس کے لیے ایک طریقہ کار پر عمل کرنا ہوتا ہے۔ان کے بقول اس مقدمے کے حوالے سے الزامات اور تصورات ہیں مگر انہیں ثابت نہیں کیا جاسکا، میں ہمیشہ سے اپنے والدین کو سرخرو کرنا چاہتا تھا، میں ہمیشہ سے ایک اچھا بیٹا بننے کی کوشش کرتا رہا ہوں اور گزشتہ 6 سال کے دوران میں نے اس خواب کی تعبیر کے لیے ہر ممکن کوشش کی ہے۔

View this post on Instagram

Today I complete 28 years of my life. I want to take up this moment to share a few thoughts that have been in my heart for a while. I wanted to wait to speak out until the case ended, but it’s taken longer than expected. I don’t know where to start from. It is difficult to express some feelings when so many people, so many emotions are involved. First, I want to thank those who have stood by me like a pillar of strength. It has been a long journey that started when I was still trying to understand life. I have been fighting the case in court for the last 6 years, with patience and respect, waiting for the trial to be completed. In this process I have been called a murderer, a criminal, an abuser and so much worse. I read these things about me almost every single day. And my heartfelt effort has always been to be strong, respectful and ignore it. But they still fill my and my loved ones’ heart with so much sadness. I don’t blame the people who call me names, because that’s how i have been portrayed in public, but i’m not the monster that has been portrayed in headlines. I know how easy it is to think the worst of someone and accuse them but it is exceptionally hard to prove myself innocent as there’s a procedure that we need to follow. A procedure that has taken long enough that i have been made to feel guilty without even being given a fair chance to prove my innocence. There have been accusations and assumptions but there has been no validation. But, this is not about what others say. This is about how I feel. For as long as I can remember, my dream has always been to make my parents proud. I have always tried to be a good son to them. In the last 6 years, I’ve tried harder everyday to achieve this dream and to be positive. So today, I am praying with my heart that our family can move forward, that the trial can come to a fair end and that I can give back all the love, support and strength I have received from so many of you. Thank you to all of you who constantly send positivity my way. You may not know it, but every single one of your prayers has helped.

A post shared by Sooraj Pancholi (@soorajpancholi) on

مزید : تفریح