پاکستان میں خواتین کو اسلامی قوانین کے تحت مقام دینا ہوگا

پاکستان میں خواتین کو اسلامی قوانین کے تحت مقام دینا ہوگا

  



مکرمی! خواتین کے حقوق کے تحفظ کے لئے ہر سال عالمی سطح پر دن منائے جانے کا سلسلہ جاری ہے، ایسے میں بڑے بڑی سیمیناروں سمیت کانفرنسوں میں اہم شخصیات خواتین کے حقوق کے بارے میں زبردست بیان تو داغ رہی ہیں،مگر پاکستان جیسے ایک اسلامی ملک میں اس پر کوئی بھی عملی کارروائی نہیں ہوتی، اسی وجہ سے وطن ِ عزیز میں حقوق کی جس طرح پامالی ہوئی وہ اقوامِ عالم میں سرفہرست ہے۔ان خیالات کا اظہار نوجوانوں کی عالمی ”پاکستان ویلفیئر کونسل“ راولپنڈی ٹوکیو کے بانی مرکزی صدر روٹری انٹرنیشنل کے ایوارڈ یافتہ بین الاقوامی سماجی کارکن نے کیا۔ اجلاس الٰہ دین گیلری ٹوکیو کے منیجنگ ڈائریکٹر عبدالحفیظ لون جاپان والا کی صدارت میں ان کی رہائش گاہ پاکستان ہاؤس میں منعقد ہوا،جس میں کونسل کے عہدیداران و ممبران نے شرکت کی۔ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے بین الاقوامی سماجی کارکن عبدالحفیظ لون جاپان والا نے کہا: وطن ِ عزیز میں خواتین کو ونی، غیرت اور رسم و رواج کی بھینٹ چڑھاتے ہوئے ان کے حقوق کو جس طرح پامال کیا جا رہا ہے، اس کی مثال دُنیا کے کسی بھی مہذب معاشرے میں نہیں ملتی،حالانکہ جتنے حقوق اسلام میں عورت کو حاصل ہیں، اتنے کسی مذہب میں نہیں ہیں، ایسے میں ہمیں عورت کو ماں، بہن اور بیٹی کی حیثیت سے اسلامی نظریات کے مطابق اس کا مقام دینا ہو گا۔

بین الاقوامی سماجی کارکن عبدالحفیظ لون جاپان والا نے کہا معاشرے میں خواتین کو ان کا جائز مقام دلایا جائے، سرکاری اور نجی اداروں میں خواتین کی ملازمتوں کا کوٹہ مختص کیا جائے، خواتین کے ساتھ زیادتی، ظلم اور تشدد کا سلسلہ بند کیا۔انہوں نے کہا کہ پاکستان میں خواتین کے ساتھ ظلم کے واقعات میں اضافہ ہو رہا ہے،ان پر مٹی کا تیل چھڑک کر آگ لگا دی جاتی ہے،آئے روز شوہر، ساس اور نندوں کی مار پیٹ اور طعنہ بازی سے خواتین ہلاک ہو رہی ہیں، عورتوں کے جلنے سے ہلاک ہونے کے واقعات میں تشویشناک حد تک اضافہ ہو رہا ہے،ان کے انسانی حقوق پامال ہو رہے ہیں،مردوں کی بالادستی اس معاشرے میں خواتین کے ساتھ جانوروں جیسا سلوک کیا جا رہا ہے، عورتوں کی تذلیل افسوسناک ہے۔ بعض مرد، خواتین کو بالوں سے پکڑ کر گھسیٹ رہے ہیں۔ اور سرعام ان کے کپڑے پھاڑ دیئے جاتے ہیں۔ظالم شوہر بیویوں کو موت کے گھاٹ اتار دیتے ہیں، ان سے ان کے بچے چھین کر گھر سے نکال دیتے ہیں۔ یہ صورتِ حال انتہائی سنگین ہے حکومت کو ایسے جرائم کے خاتمے کے لئے سخت قوانین بنانے چاہئیں۔

بین الاقوامی سماجی کارکن عبدالحفظ لون جاپان والا نے کہا ہے کہ اسلام نے عورت کو سب سے زیادہ احترام اور عزت دی ہے ان کے لئے جائیداد میں حصہ مقرر کیا ہے،مگر ہمارے دیہات میں عورتوں کو وراثت سے حصہ دینا معیوب سمجھا جاتا ہے،حکومت کو اس طرف بھی توجہ دینی چاہیے اور دیہی خواتین کو جائیداد میں سے حصہ دلانا چاہئے۔ پاکستان میں اپنے حقوق مانگنے والی خواتین ریاستی تشدد کا شکار ہیں۔ملک بھر میں آج بھی لاتعداد خواتین بھٹوں پر جبری مشقت اور مجبوری کے ہاتھوں گھروں، فیکٹریوں اور کھیتوں میں کام کرتی نظر آتی ہیں،جو ہمارے معاشرے کے منہ پر طمانچہ ہیں۔انہوں نے جیلوں میں طویل قید و بند کی صعبتیں برداشت کرنے والی ایسی خواتین، جن کے بچے بھی ناکردہ گناہوں کی پاداش میں بند ہیں،انہیں فوری طور پر رہا کرنے کا مطالبہ کیا ہے تاکہ ان کی اولادیں جرائم سے بچ سکیں۔آخر میں سماجی کارکن عبدالحفیظ لون جاپان والا نے سماجی تنظیموں سے پُرزور اپیل کی ہے کہ وہ خواتین کی فلاح و بہبود کے لئے کام کریں۔ (عبدالحفیظ لون جاپان والا)

مزید : رائے /اداریہ