بابری مسجد پربھارت کی سپریم کورٹ کا فیصلہ شرمناک ہے‘ طاہر اقبال

بابری مسجد پربھارت کی سپریم کورٹ کا فیصلہ شرمناک ہے‘ طاہر اقبال

  



وہاڑی(بیورورپورٹ،نمائندہ خصوصی)رہنما پاکستان تحریک انصاف اور رکن قومی اسمبلی طاہر اقبال چوہدری ارکان صوبائی اسمبلی (بقیہ نمبر21صفحہ12پر)

اعجاز بندیشہ اور رائے ظہوراحمد کھرل نے کہا ہے کہ ہمارے قائد اور بھارت کی مودی سرکار میں یہ فرق ہے کہ ہم نے عملی طور پر ثابت کیا ہے کہ ہم اقلیتی بھائیوں کو سینے سے لگا کر رکھتے ہیں جبکہ مودی نے جس دن سے حکومت سنبھالی ہے مسلمانوں، سکھوں،عیسائیوں اور دیگر اقلیتی مکینوں کی زندگی جہنم بنا رکھی ہے جبکہ بابری مسجد پربھارت کی سپریم کورٹ نے ایک شرمناک فیصلہ کرکے وہاں کی مسلمان کمیونٹی کو نہ صرف مایوس کیا ہے بلکہ انہیں غیر محفوظ بنا دیا ہے جس ملک میں حکومت اپنے لوگوں کو نقصان پہنچائے وہاں عدالت حق دلواتی ہے لیکن جہاں عدالتی قریش بن جائیں آئیں وہاں مکین اپنے آپ کو انتہائی غیر محفوظ سمجھتے ہیں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے پی ٹی آئی رہنما نے کہا کہ کرتارپور راہداری جہاں سکھوں کے لیے ایک بہت بڑا تحفہ ہے وہاں دوسری اقلیتیں بھی پاکستان میں بہت خوش اور عمران خان کے اس فیصلے کو ایک تاریخی فیصلہ قرار دے رہے ہیں اس وقت پوری دنیا کی سکھ برادری پاکستان اور عمران خان کو نہ صرف زبردست خراج تحسین پیش کررہی ہے بلکہ انہیں اپنا محسن سمجھ رہی ہے ہے جس نے ان کے روحانی رہنما کی آخری آرام گاہ تک پہنچانے کا بہترین انتظام کیا۔

طاہر اقبال

مزید : ملتان صفحہ آخر