قومی اسمبلی، مارگیجڈ سیکیورٹیز آرڈیننس میں 4ماہ توسیع کی قرار داد منظور

  قومی اسمبلی، مارگیجڈ سیکیورٹیز آرڈیننس میں 4ماہ توسیع کی قرار داد منظور

  



اسلام آباد(سٹاف رپورٹر، نیوز ایجنسیاں) قومی اسمبلی میں بازیافت پشتی رہن ضمانتیں (مارگیجڈ  سیکیورٹیز) آرڈیننس میں 120دن کی توسیع کی قرار داد منظور کر لی گئی جبکہ ٹیکس قوانین میں ترمیم اور  مجموعہ ضابطہ دیوانی ترمیمی آرڈیننس پیش کر دئے گئے۔پیر کو قومی اسمبلی کا اجلاس سپیکر اسد قیصر کی زیر صدارت ہوا۔اجلاس میں وفاقی وزیر ہاؤسنگ اینڈ ورکس طارق بشیر چیمہ نے  بازیافت پشتی رہن ضمانتیں آرڈیننس (نمبر9بابت 2019) میں 120دن کی توسیع کی قرار داد پیش کی،سپیکر اسد قیصر نے رائے شماری کے بعد قرار داد کثرت رائے سے منظور کر لیا۔وزیر مملکت پارلیمانی امور علی محمد خان نے قوانین محصولات (ترمیمی)آرڈیننس (نمبر 13بابت 2019) اور مجموعہ ضابطہ دیوانی ترمیمی آرڈیننس  (نمبر22بابت2019) پیش کئے۔بعدازاں وقفہ سوالات میں مختلف سوالوں کے جواب دیتے ہوئے وفاقی وزرا مراد سعید،عمر ایوب خان اور پارلیمانی سیکرٹری ثوبیہ کمال نے قومی اسمبلی کو آگاہ کیا کہ سمند ر میں تیل کی تلاش کیلئے ابتک 18کنویں کھو دے گئے مگربدقسمتی سے تمام خشک نکلے،گزشتہ 5سال میں ملک بھر میں تیل و گیس کے مجموعی طور پر107ذخائر دریافت ہوئے،گزشتہ ایک سال کے دوران دنیا بھر سے4637پاکستانی قیدی رہا ہوئے۔سعودی ولی عہد کی جانب سے انسانی ہمدردی کے تحت اعلان کے بعد سعودی عرب سے 1594پاکستانی شہری رہا کئے گئے،یو اے ای سے1873،ملائیشیا سے782،لیبیا سے167،بھارت سے50اور امریکہ سے 25،آذربائیجان سے4،بنگلہ دیش سے3،بلغاریہ سے13،کمبوڈیا سے 5،چین سے 4،فرانس سے 12،انڈونیشیا سے 3،ایران سے3،قبرص سے6،مالدیپ سے2،جنوبی افریقہ سے 4،قطرسے53،تھائی لینڈ سے 17،فلپائن سے5،پولینڈ سے7،نیپال سے4 اور ماریشس سے 1پاکستانی قیدی کو رہا کیا گیا۔2030تک ملک میں 80فیصد بجلی ملکی وسا ئل سے پیدا کرینگے، جس میں 30فیصد متبادل ذرائع،30فیصد ہائیڈل،10فیصد نیوکلئیر اور 10فیصد کول پاور ہو گی۔ ایک سال میں پاکستان پوسٹ کی آمدن میں 3ارب اور این ایچ اے کے ریونیومیں 43ارب روپے اضافہ ہوا۔ گرمیوں میں گلگت بلتستان میں بجلی کی طلب 254میگا واٹ جبکہ 113میگا واٹ فراہم کی جارہی ہے جبکہ موسم سرما میں 454میگا واٹ طلب اور86میگا واٹ بجلی فراہم کی جارہی ہے۔ گزشتہ 3سال کے دوران ملک بھر آئل کے ذخائر سے ہونیوالی آمدن پر متعلقہ علاقوں کو 2198ملین روپے رائلٹی کی مد میں ادا کئے گئے۔ لاہور ملتان موٹروے پر قیام وطعام کو سالانہ 17لاکھ روپے لیز پر دیا گیا تھا ہم نے لیز منسوخ کر کے بڈنگ کے ذریعے قیام و طعام کو ماہانہ 65لاکھ روپے لیز پر دیدیا۔

قومی اسمبلی

مزید : صفحہ آخر