2017 کے بعد حوثیوں کے ہاتھوں انسانی حقوق کی 25 ہزار خلاف ورزیاں

  2017 کے بعد حوثیوں کے ہاتھوں انسانی حقوق کی 25 ہزار خلاف ورزیاں

  



نیویارک(این این آئی) انسانی حقوق کی ایک سرکاری رپورٹ میں انکشاف کیا گیا ہے کہ حوثی بغاوت ملیشیاؤں نے 2017 کے آغاز سے اب تک دارالحکومت صنعا میں عام شہریوں کے خلاف انسانی حقوق کی 25 ہزار خلاف ورزیوں کا ارتکاب کیا ہے۔میڈیارپورٹس کے مطابق یہ بات دارالحکومت میں انسانی حقوق کے دفتر کے ذریعہ تیار کردہ ایک رپورٹ میں سامنے آئی۔جبر کی لکیر کے نیچے کے عنوان سے جاری کردی رپورٹ میں کہا گیاکہ حوثی ملیشیا نے اپنے زیرتسلط علاقوں بالخصوص صنعا، مارب اور دیگر مقامات پر بنیادی انسانی حقوق کی ہزاروں بار پامالی کی۔انسانی حقوق کے لیے کام کرنے والے گروپ کے دارالحکومت سکریٹریٹ میں ڈائریکٹر جنرل فہمی الزبیری نیسنہ 2017 کے آغاز سے دارالحکومت کے عوام کے خلاف حوثی ملیشیا کی خلاف ورزیوں کا ایک جائزہ لیا اور اس کے اعدادو شمار اس رپورٹ میں پیش کیے ہیں۔ رپورٹ میں شہریوں کو وحشیانہ طریقے سے قتل کرنے، انہیں زخمی کرنے، تشدد، گرفتاریوں اور سرکاری و نجی املاک کی لوٹ مار، بچوں کی بھرتی اور خواتین کے حقوق کی خلاف ورزی کے واقعات شامل ہیں۔الزبیری نے بتایا کہ گذشتہ دو سال کے دوران حوثیوں کے ہاتھوں انسانی حقوق کی 25 ہزار پامالیوں کے واقعات کا ریکارڈ ملا ہے۔ رواں سال صنعا میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کے 714 واقعات سامنے آئے جو 45 فی صد زیادہ ہیں۔انہوں نے نشاندہی کی کہ سب سے سنگین جرائم کا ارتکاب براہ راست فائرنگ اور قتل کے واقعات تھے جن کی تعداد 274 بتائی جاتی ہے۔رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ حوثی ملیشیا کے پرتشدد حربوں سے شہریوں کے زخمی ہونے کے 105 واقعات کا اندراج کیا گیا۔ زخمیوں میں سے 9 مکمل طورپر معذور ہوگئے جب کہ 5 شہری درمیانے درجے کی معذوری کا شکار ہوئے۔ تشدد کے 7 واقعات کے متاثرین کی یاداشت بری طرح متاثر ہوئی۔یمنی وزیر مملکت امین عبدالغنی جمیل نے خبردار کیا کہ حوثی ملیشیا کے ہاتھوں انسانی حقوق کی سنگین پامالیوں کے واقعات میں روز بہ روز اضافہ ہوتا جا رہا ہے۔

انہوں نے یمن میں ایرانی حمایت یافتہ حوثی ملیشیا کی کارروائیوں پر عالمی برادری اور بین الاقوامی انسانی حقوق کی تنظیموں کی مجرمانہ خاموشی کی شدید مذمت کی اور عالمی برادری سے مطالبہ کیا کہ وہ یمن میں ہونے والی انسانی حقوق کی سنگین پامالیوں کا نوٹس لے۔

مزید : عالمی منظر