لاہورہائیکورٹ نے سموگ کیخلاف کیس کی سماعت کے دوران ایڈووکیٹ جنرل پنجاب کو جواب کیلئے 19 نومبر تک مہلت دےدی

لاہورہائیکورٹ نے سموگ کیخلاف کیس کی سماعت کے دوران ایڈووکیٹ جنرل پنجاب کو ...
لاہورہائیکورٹ نے سموگ کیخلاف کیس کی سماعت کے دوران ایڈووکیٹ جنرل پنجاب کو جواب کیلئے 19 نومبر تک مہلت دےدی

  



لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)لاہورہائیکورٹ میں سموگ کیخلاف کیس کی سماعت کے دوران ایڈووکیٹ جنرل پنجاب نے حکومت سے ہدایات کیلئے مہلت کی استدعا کردی،عدالت نے ایڈووکیٹ جنرل پنجاب کو جواب کیلئے 19 نومبر تک مہلت دےدی۔

تفصیلات کے مطابق لاہور ہائیکورٹ میں سموگ کے خلاف کیس کی سماعت ہوئی،جسٹس مامون الرشید شیخ نے سموگ کیخلاف درخواستوں پر سماعت کی،عدالتی حکم پر ایڈووکیٹ جنرل پنجاب احمد جمال سکھیرا عدالت میں پیش ہوئے۔ایڈووکیٹ جنرل پنجاب نے حکومت سے ہدایات کیلئے مہلت کی استدعا کردی،ایڈووکیٹ جنرل پنجاب نے کہا کہ پالیسی معاملہ ہے اس پر ازخود کچھ نہیں کہہ سکتا، حکومت جو کچھ کرسکتی ہے وہ کررہی ہے،ڈاکٹر پرویز حسن کی سربراہی میں کمیشن بنا ہوا ہے۔

عدالت نے استفسار کیاکہ آگاہ کیا جائے سموگ کے تدارک کے لیے کیا اقدامات کیے گئے ؟عدالت نے کہا کہ ایسے درخت لگانے چاہییں جو زیادہ آکسیجن پیدا کرتے ہوں، ایڈووکیٹ جنرل پنجاب نے کہاکہ اب سبزہ زیادہ اگائیں یہاں تک کہ روف ٹاپس پر بھی سبزہ لگانے کی پالیسی ہے، عدالت نے کہا کہ یہ بنیادی انسانی حقوق سے متعلق معاملہ ہے، عدالت نے ایڈووکیٹ جنرل پنجاب کو جواب کیلئے 19 نومبر تک مہلت دےدی۔

مزید : علاقائی /پنجاب /لاہور