طالبان کے ساتھ مذاکرات میں تاخیر سمجھ سے بالاتر ہے،عبد الغفار روپڑی

طالبان کے ساتھ مذاکرات میں تاخیر سمجھ سے بالاتر ہے،عبد الغفار روپڑی

لاہور(پ ر) اگر حکومت طالبان سے مذاکرات کیلئے سنجیدہ ہے تو مذاکرات میں تاخیر سمجھ سے بالا تر ہے ملک و ملت کے مفاد اور بہتری کےلئے مذاکرات کی ٹیبل پر بیٹھنا ناگزیر ہے ان خیالات کا اظہار جماعت اہلحدیث پاکستان کے امیر حافظ عبدالغفار روپڑی نے گزشتہ روز اپنے ایک بیان میں کیا انہوں نے کہا کہ پورے ملک میں دہشت گردی کا خونی کھیل کھیلا جا رہا ہے جس کے نتیجے میں روزانہ کی بنیاد پر درجنوں لوگ لقمہ اجل بن جاتے ہیں اور سینکڑوں خاندان بے گھر ہو جاتے ہیں انہوں نے گفتگو کرتے ہوئے کہاکہ حکومت اور طالبان کے درمیان مذاکرات کو سبوتاژ کر کے بیرونی ملک دشمن طاقتیں فائدہ اٹھانا چاہتی ہیں جن کا مقصد محض پاکستان کو غیر مستحکم اور عالمی سطح پر بدنام کرنا ہے انہوں نے مزید گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ملالہ کو درجنوں ایوارڈز سے نوازنے والی امن اور حقوق کی نام نہاد علمبردار تنظیموں کو دہشت گردی کے نتیجے میں اللہ کو پیار ہو جانے والی سینکڑوں ملالائیں نظر نہیں آتیں ان کے خونِ ناحق پر وہ اپنی آنکھیں بند کیے ہوئے ہیں انہوں نے واضح کیا کہ ملالہ یوسف زئی کو خوامخواہ انعامات سے نوازا جانا اسلام اور ملک پاکستان کےخلاف بہت بڑی سازش کا حصہ ہے حکومت فوری طور پر امریکی نام نہاد دہشت گردی سے علیحدگی اختیار کرے اور طالبان کے ساتھ مذاکرات کو یقینی بنائے تاکہ ملک میں جاری تخریب کاری کے واقعات میں ملوث اصل چہروں کو بے نقاب کیا جا سکے۔

مزید : میٹروپولیٹن 4