6ایڈیشنل ججوں کےعہدوں کی مدت میں ایک سال کی توسیع کی سفارش

6ایڈیشنل ججوں کےعہدوں کی مدت میں ایک سال کی توسیع کی سفارش

                                          لاہور(نامہ نگار خصوصی )جوڈیشل کمیشن نے لاہور ہائیکوٹ کے 6 ایڈیشنل ججوں کو مستقل کرنے کا معاملہ مﺅخر کرتے ہوئے ان کے عہدوں کی مدت میں ایک سال کی توسیع کی سفارش کردی ہے۔جوڈیشل کمیشن نے مزید کارروائی کے لئے معاملہ پارلیمانی کمیٹی کو بھیج دیا ہے ۔عدالت عالیہ کے جن ایڈیشنل ججوں کو ایک سال کی توسیع ملی ہے ان میں مسٹرجسٹس محمود بھٹی،مسٹرجسٹس ارشد محمود تبسم،مسٹرجسٹس طارق عباسی،مسٹرجسٹس مسعود جہانگیر، مسٹرجسٹس صداقت علی خان اورمسٹر جسٹس سہیل اقبال بھٹی شامل ہیں۔ان ججوں کو گزشتہ سال 29اکتوبر کو لاہور ہائی کورٹ میں ایک سال کے لئے ایڈیشنل جج مقرر کیا گیا تھا ۔28اکتوبر کو ان کا ایک سال مکمل ہورہا ہے اس تاریخ سے قبل انہیں کنفرم کرنا یا عہدے میں توسیع دینا ضروری تھا،بصورت دیگر وہ 28اکتوبر کو اپنے عہدوں سے سبقدوش ہوجاتے۔گزشتہ روز چیف جسٹس پاکستان مسٹر جسٹس ناصر الملک کی سربراہی میں جوڈیشل کمیشن کا اجلاس سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں منعقدہواجس میں عدالت عظمی ٰ کے 4سینئر ترین جج ،لاہور ہائیکورٹ کے چیف جسٹس مسٹر جسٹس خواجہ امتیاز ،عدالت عالیہ کے سینئر ترین جج مسٹر جسٹس منظور احمد ملک ،وفاقی و صوبائی وزراءقانون اور کمیشن کے دیگر ممبران بھی شریک ہوئے ۔اجلاس میں عدالت عالیہ کے ایڈیشنل ججوں کی کارکردگی کا تفصیلی جائزہ لینے کے بعد انہیں ایک سال کی توسیع دینے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔جوڈیشل کمیشن کے اجلاس کے موقع پر سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں سکیورٹی کے سخت انتظامات دیکھنے میں آئے۔

مدت توسیع

مزید : صفحہ آخر