ہمیں انصاف دو، لاپتہ افراد کو بازیاب کرو ‘سری نگر میں لواحقین کا خاموش دھرنا

ہمیں انصاف دو، لاپتہ افراد کو بازیاب کرو ‘سری نگر میں لواحقین کا خاموش ...

سری نگر(کے پی آئی) بھارتی فورسز کی حراست میں لاپتہ ہونے والے افراد کے لواحقین کی تنظیم(اے پی ڈی پی ) نے سری نگر میں خاموش احتجاجی دھرنا دے کر نوجوانوں کی بازیابی کا مطالبہ کیا۔ پرتاب پارک سرینگر میں صبح وادی کے اطراف و اکناف سے تعلق رکھنے والے درجنوں مردوزن پرتاب پارک سرینگر میں جمع ہوئے اورپروینہ آہنگر کی سر براہی والی اے پی ڈی پی کے بینر تلے اپنے عزیز و اقارب اور لخت جگروں کی بازیابی کے حق میں خاموش احتجاجی دھرنا دیا۔

احتجاجی مظاہرین نے اپنے ہاتھوں میں بینر اور پلے کارڈ اٹھارکھے تھے جن پر ہمیں انصاف دو، لاپتہ افراد کو بازیاب کرو کے نعرے درج تھے ،جبکہ بیشتر پلے کارڈوں اور بینروں پر ان نوجوانوں کی تصویریں چسپاں تھیں جو گزشتہ 2 دہا ئیوں کے دوران فورسز کے ذریعے دوران حراست لاپتہ کرد ئے گئے ہیں۔اس موقع پر گمشدہ افراد کے اقربا نے اقوام متحدہ اور انسانی حقوق کی تنظیموں سے اپیل کی کہ وہ جموں و کشمیر میں جبری طور لاپتہ کئے گئے افراد کی بازیابی کیلئے اپنا کردار ادا کریں۔چنانچہ اس دوران وہاں اسوقت رقعت آمیز مناظر دیکھنے کو ملے جب اپنے لخت جگروں کی باز یابی کرنے کا مطالبہ کر رہی کئی خواتین کی آنکھیں نم ہوئیں اور معصوم بچوں کے چہرے اداسی اور بے بسی کی تصویر پیش کر رہے تھے۔اس موقع پر اے پی ڈی پی کی سربراہ پروینہ آہنگر نے بتایا وادی میں بڑی مشکل سے نوجوانوں کی گمشدگی کا سلسلہ بند ہوگیا تھا ،لیکن گذشتہ ماہ دیور لولاب سے ایک شخض غائب ہو گیا اور اس طرح یہ سلسلہ از سرنو شروع ہوگیا ہے جو تشویش ناک ہی نہیں بلکہ قابل مذمت بھی ہے ۔انہوں نے ریاستی حکومت کو آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے کہا کہ خواتین کے بالوں کی چوٹیاں کاٹے جانے کی وارداتیں بڑی تیزی سے بڑ رہی ہیں جس کے باعث عورتوں کا گھر سے نکلنا دشوار ہوگیا ہے اور ریاستی سرکار اس سلسلے میں خاموش تماشاہی بنی ہوئی ہے ۔پرینہ آہنگر نے کہا کہ وہ حق کی لڑائی لڑ رہی ہیں جو تب تک جاری رہے گی جب تک نہ انصاف کے تقاضوں کو پورا نہیں کیا جاتا ہے۔ان کا کہنا تھا کہ ان کے لخت جگروں کی گمشدگیوں کا معاملہ غیر جانبدارانہ تحقیقات کا توجہ طلب ہے کیو نکہ آج تک کسی بھی مرکزی اور ریاستی حکومت نے گمشدہ افراد کی بازیابی یا انکا پتہ بتانے کے حوالے سے کوئی ٹھوس اقدامات نہیں اٹھائے۔احتجاج میں شامل ایک خاتوں نے کہا کہ انتظامیہ کے بلند بانگ دعووں کے باوجود ابھی تک لاپتہ افراد کی بازیابی کیلئے کوئی اقدام نہیں اٹھائے گئے ہیں اور ان کے لواحقین ابھی بھی اپنے لخت جگروں کی واپسی کا انتظار کر رہے ہیں۔

مزید : عالمی منظر


loading...