خلیجی ممالک پر حوثیوں کے حملے خطرناک ہیں: اقوام متحدہ

خلیجی ممالک پر حوثیوں کے حملے خطرناک ہیں: اقوام متحدہ

نیو یا رک (آن لائن)یمن کے لیے اقوام متحدہ کے خصوصی ایلچی اسماعیل ولد الشیخ احمد نے کہا ہے کہ ان کی تمام تر کوششوں کا مقصد یمن میں متحارب فریقین کو بات چیت کے لیے مذاکرات کی میز پر مرکوز ہیں۔ حوثی باغیوں کی جانب سے خلیجی ممالک پر راکٹ حملے کرنا انتہائی خطرناک اقدام ہے۔ اس طرح کی کارروائیوں کے نتیجے میں خطے میں کشیدگی اور عدم استحکام میں مزید اضافہ ہوسکتا ہے۔سلامتی کونسل کے اجلاس سے خطاب میں یو این مندوب کا کہنا تھا کہ یمن کے کئی شہر مسلسل تشدد کی لپیٹ میں ہیں۔ ان میں تعز اور الجوف کے علاقے سب سے زیادہ متاثر ہوئے ہیں۔ اقوام متحدہ کے امن مندوب ولد الشیخ احمد نے بتایا کہ یمن میں بنیادی ڈھانچے کی تباہی نے ہیضے وباء4 میں اضافہ کیا۔ اس وقت بھی یمن میں ایک کڑوڑ 70 لاکھ افراد خوراک کی قلت کا شکار ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ یمن میں جاری بحران کے سیاسی حل میں رکاوٹوں نے یمنی عوام کی مشکلات میں مزید اضافہ کیا ہے، اس جنگ میں کوئی فریق فائدے میں نہیں رہا۔ تمام فریقین کو بات چیت کے لیے زمین ہموار کرنا ہوگی۔ ہم نے اس سلسلے میں تمام یمنیوں کے لیے جامع حل پیش کیا ہے

مزید : عالمی منظر


loading...