ہائیکورٹ : ایف بی آر سے دولت ٹیکس کی وصولی کی تفصیلات طلب

ہائیکورٹ : ایف بی آر سے دولت ٹیکس کی وصولی کی تفصیلات طلب

لاہور(نامہ نگارخصوصی )لاہور ہائیکورٹ نے ایف بی آر سے دولت ٹیکس کی وصولی کی تفصیلات طلب کرلی ہیں ،عدالت نے یہ کارروائی اے کے ڈوگر ایڈووکیٹ کی طرف سے دائر درخواست پر کی ہے ۔درخواست گزار اے کے ڈوگر ایڈووکیٹ نے عدالت میں موقف اختیار کیا کہ 2000ء کے فنانس ایکٹ میں دولت ٹیکس کا نفاذ ختم کردیا گیاجس کے باعث دولت امراء کے ہاتھوں میں مرتکز ہو کر رہ گئی ہے جو کہ آئین کے آرٹیکل 38کی سنگین خلاف ورزی ہے،دولت ٹیکس ایکٹ 1963ء پر عمل درآمد روکنے سے قومی خزانے کو 100بلین کا نقصان اٹھانا پڑا، ایف بی آر کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ ویلتھ ٹیکس کی عدم وصولی سے ادارے کو بھی نقصان کا سامنا ہے جس پر عدالت نے استفسار کیا کہ ایف بی آر کو کس نے ویلتھ ٹیکس کی وصولی سے روکا ہے، ایف بی آر ہی ہر سال فنانس ایکٹ بناتی ہے تو اس میں ویلتھ ٹیکس کے نفاذ کی سفارش کیوں نہیں کی گئی، عدالت نے ریمارکس دئیے کہ عدالت کو بتایا جائے کہ ویلتھ ٹیکس کے خاتمہ سے قبل اس ٹیکس کی وصولی میں کمی ہورہی تھی یا اضافہ ہورہاتھا،اس سلسلے میں آئندہ تاریخ سماعت پر تفصیلات فراہم کی جائیں۔

مزید : صفحہ آخر


loading...