سندھ میں گندے پانی اورغذائی قلت سے بچے مررہے ہیں ، مصطفی کمال

سندھ میں گندے پانی اورغذائی قلت سے بچے مررہے ہیں ، مصطفی کمال

حیدرآباد(آن لائن) پاک سرزمین پارٹی کے سربراہ مصطفی کمال نے کہا ہے کہ سندھ میں غذائی قلت اور گندے پانی کی وجہ سے بچے مررہے ہیں ، لوگوں کے پاس کھانے کو روٹی اور پینے کو پانی نہیں ہے۔ سندھ کے لوگوں میں دوریاں ختم ہوگئی ہیں۔ وہ گدو چوک پر منعقدہ پرچم کشائی کی تقریب سے خطاب کررہے تھے۔ اس موقع پر انیس قائم خانی اور دیگر بھی موجو دتھے۔ انہوں نے کہا جو شخص اختیارات کار ونا روتا ہے اس کے پاس اختیارات نہیں ہیں تو وہ استعفیٰ دے کر گھر چلا جائے ۔ ساڑھے چار سال تک اقتدار کے مزے لوٹنے کے بعد کہتے ہیں کہ اب اختیارات نہیں ، لوگوں کو کب تک دھوکہ دیتے رہو گے ۔ انہوں نے کہاکہ سندھ کے لوگوں نے پی ایس پی کو آپشن کے طورپر اپنا لیا ہے۔ سندھ کے لوگوں میں دوریاں ختم ہوگئی ہیں ، لوگ ہمارے کردار اور کام سے واقف ہیں ، ہم ایم این اے اور ایم پی اے بننے کیلئے سیاست نہیں کررہے ہمارے پاس تمام سہولیات موجود تھیں جنہیں لات مار کر ہم لوگوں میں آگئے ہیں ، ہمارے ایم پی ایز نے استعفے دئے ، انیس قائم خانی ڈپٹی کنوینر تھے ، ہم نے سب کچھ چھوڑ دیا۔ انہوں نے کہاکہ سندھ کے 23اضلاع میں پی ایس پی کا تنظیمی سیٹ اپ موجود ہے ، عوام کی خدمت کے حوالے سے حکمران جماعتیں اپنی عزت اپنا مینڈیٹ کھوچکی ہیں۔ جب ہمارا وزیراعلیٰ منتخب ہوکر آئے گا تو وہ نچلی سطح تک اختیارات تقسیم کرے گا اور خود ان کی مانیٹرنگ کرے گا۔ ہم سندھ کے ہر قصبے اور تحصیل میں جاکر براہ راست عوام سے ملاقاتیں کررہے ہیں ۔انہوں نے کہاکہ آنے والے انتخابات میں سندھیوں کے ساتھ مل کر اپنا وزیراعلیٰ بنائیں گے اور لوگوں کے مسائل حل کریں گے، اگر عوام کے مسائل حل نہ کئے تو بڑا طوفان آئے گا۔ انہوں نے کہاکہ سندھ میں غذائی قلت اور گندے پانی کی وجہ سے بچے مررہے ہیں ، لوگوں کے پاس کھانے کو روٹی اور پینے کو پانی نہیں ہے۔ سندھ میں 70لاکھ بچے اسکول نہیں جاتے ، انہوں نے کہاکہ عوام کے پاس ووٹ کی طاقت ہے ، وہ اپنی طاقت کے ذریعے ظلم سے چھٹکارا حاصل کرسکتے ہیں۔

مصطفی کمال

مزید : صفحہ آخر


loading...