نابینا افراد کا کلمہ چوک میٹرو بس کے روٹ پر دھرنا، سروس معطل

نابینا افراد کا کلمہ چوک میٹرو بس کے روٹ پر دھرنا، سروس معطل

لاہور( لیڈی رپورٹر،صباح نیوز) نابینا افراد نے کلمہ چوک فیروز پور روڈ پر گزشتہ روز بھی اپنے مطالبات کے حق میں احتجاجی مظاہر ہ کیا اور میٹرو بس سروس کو بھی احتجاجی دھرنا دیکر روک دیا جس کی وجہ سے کلمہ چوک سے میٹرو بس سروس کے مسافروں کو مشکلات کا سامنا رہا اور وہاں سے مسافروں کو میٹرو بس سروس سے اترنا پڑا ۔تفصیلات کے مطابق نابینا افراد کا اپنے مطالبات کے حق میں احتجاجی مظاہرے اور دھرنے کا سلسلہ جاری رہا منگل کے روز ان مظاہرین نابینا افراد کو محکمہ سوشل ویلفئر والے مذاکرت کے لئے اپنے آفس ٹاؤن شپ لے گئے تھے اور ان کے ساتھ مذاکرت بھی کئے لیکن بدھ کے روز ان نابینا افراد نے ایک مرتبہ پھر فیروز پور روڈ پر احتجاجی مظاہرہ بھی کیا اور دھرنا بھی دیدیا ۔دوسری جانب ترجمان محکمہ سوشل ویلفےئر و بیت المال پنجاب نے کہا ہے کہ نابینا افرادکے موجودہ مطالبات میں سے بیشتر انفرادی نوعیت کے ہیں جنھیں سڑکوں پر آکر اُلجھانے کی بجائے میزکے گرد بیٹھ کر سلجھانے کی ضرورت ہے عارضی نوکریوں کو مستقل کرنے اور عمر کی بالائی حد میں مزید اضافے کیلئے سینیٹر سعود مجید کی سربراہی میں کمیٹی تشکیل دیدی گئی ہے جو معذور افراد کی سفارشات پرقوائد کے مطابق نظرثانی کرے گی۔ محکمہ سوشل ویلفےئر و بیت المال پنجاب معذور افراد کے ساتھ مکمل تعاون کر رہا ہے ۔ ملازمتوں کے کوٹہ میں اضافہ اور 3988سے زائد نشستوں پر معذور افراد کی تعیناتی جن میں61%جسمانی طور پر معذور افراد، 32%نابینا افراد اور 7%سماعت سے محروم افراد کو نوکریاں اس بات کا منہ بولتا ثبوت ہے کہ حکومت پنجاب معذور افراد کے مسائل حل کرنے کے لیے ٹھوس اقدامات اُٹھا رہی ہے۔ تاریخ میں پہلی بارخصوصی افراد کی بحالی کے لیے صوبائی سطح پر پالیسی وضع کی گئی ہے جس کے تحت اُنھیں نہ صرف ملازمتیں فراہم کی جارہی ہیں بلکہ امدادی آلات کی فراہمی، وظائف کی تقسیم، سکلز ٹریننگ اور ذاتی کاروبار کے آغاز کے لیے بلاسود قرض کی فراہمی کی بھی منصوبہ بندی کی جا رہی ہے۔بیروزگار افراد کو محکمہ زکوۃٰ کے توسط سے گزارہ الاؤنس دیا جا رہا ہے اورپنجاب ویلفےئر ٹرسٹ اور اخوت فاؤنڈیشن کے اشتراک سے مائیکرو فنانسنگ کی سہولیات مہیا کی جا رہی ہیں۔ کم بصارت رکھنے والے افراد کی معذوری کے خاتمے کے لیے صوبے کے 13اضلاع میں بحالی مراکز قائم کیے جا رہے ہیں جہاں اُن کے بصری مسائل کا مفت علاج کیا جائے گا۔ تعلیمی اداروں میں تدریسی اخراجات کے خاتمے کے ساتھ ساتھ داخلے کے لیے عمر کی آخری حد کی شرائط ختم کر دی گئی ہیں۔ سرکاری ملازمتوں میں نابینا افراد سمیت تمام معذور افراد کو 10سال کی مزید رعایت دی گئی ہے۔ محکمہ سوشل ویلفےئر کی کوششوں سے 690بینائی سے محروم،351قوت گویائی اور سماعت سے محروم اور 2947عضویاتی نقائص کا شکار افراد مختلف سرکاری محکموں میں ملازمتیں حاصل کر چکے ہیں۔۔ ان تمام اقدامات کے باوجود نابینا افراد کی جانب سے ادارے کے خلاف کیا جانے والا احتجاج ناقابل فہم ہے۔ ترجمان نے مزید کہا کہ یہ تاثر بالکل غلط ہے کہ گزشتہ روز دھرنا دینے والوں کے ساتھ محکمہ کی جانب سے کوئی زور زبردستی کی گئی اس کے برعکس اُنھیں سوشل ویلفےئر کمپلیکس میں کھانا کھلایا گیا اور اُنھیں یقین دلایا گیا کہ اُن کے تمام مطالبات حکومتی اراکین تک پہنچائے جائیں گے۔ دوسری طرف مظاہرین کا کہنا تھا کہ ہمارے ساتھ مذاق کیا جا رہا ہے، اعلیٰ حکام کی جانب سے ہمیں تسلیوں کے علاوہ کچھ نہیں دیا جاتا،انہوں نے کہا کہ ہمارے مطالبات پورے کئے جائیں اور ہمیں نوکریاں دی جائیں ۔اس سے قبل گزشتہ روز نابینا افراد نے لاہور پریس کلب کے سامنے دھرنا دیا تھا، جس میں مظاہرین نے ڈیلی ویجز ملازمین کو مستقل کرنے کا مطالبہ کیا تھا۔مظاہرین کا کہنا تھا کہ بار بار احتجاج کے باوجود حکومت صرف لالی پاپ دے کر ٹرخا دیتی ہے، پچھلی بار احتجاج پر دیا جانے والے نوٹیفیکیشن صرف دھوکہ تھا، ملازمین کو مستقل کرنے کی بجائے برطرف کیا جارہا ہے۔

مزید : صفحہ آخر


loading...