صوبے میں عظیم پختون اتحاد کی ضرورت ہوگی ،حمایت اللہ مایار

صوبے میں عظیم پختون اتحاد کی ضرورت ہوگی ،حمایت اللہ مایار

بخشالی ( نمائندہ پاکستان ) آئندہ عام انتخابات میں صوبہ میں ایک عظیم پختون اتحاد کی ضرورت ہو گی ،اے این پی کی معاشی پالیسی پختونوں کو ملک کے خوشحال صوبوں کے برابر لا کر کھڑا کرے گی ،ہمارے دور حکومت کے پانچ سال میں گزشتہ گزشتہ 61سالوں سے زیادہ ترقیاتی منصوبے شروع کئے ہیں ان خیالات کا اظہار اے این پی ضلع مردان کے صدر اور ڈسٹرکٹ ناظم اعلیٰ مردان حمایت اللہ مایار نے بخشالی میں اے این پی یو سی بخشالی کے صدر واجد خٹک کے حجرے میں عوامی نیشنل پارٹی کے منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا اس موقع پر مرکزی وصوبائی کونسل ممبر محمد انور خان ،امجد خان ،ہارون خان ،ہمایون خان ،تحصیل کونسلر اعجاز احمد ،یو سی بخشالی کے صدر واجد خٹک اور جان گل کے علاوہ پارٹی کارکنان اور عمائدین علاقہ نے کثیر تعداد میں شرکت کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے حمایت اللہ مایار نے کہا کہ غربت بے روزگاری اور بد امنی کے مارے اس صوبے کے پختون کو کبھی مذہب اور شریعت کے نام پر دھوکہ دیا گیا تو کبھی روٹی کپڑا مکان کے نام پر ورغلائے گئے تو کھبی تبدیلی کے نام پر حالانکہ اسلام کے دعویداروں کا اصل مطمع نظر اسلام آباد تھا جبکہ تبدیلی کے دعویداروں نے پختونوں کو مایوسی بے روزگاری اور غربت وپستی کے سوا کچھ نہیں دیا اور اس صوبہ کے غیرت مند پختونوں کی دی ہوئی مینڈیٹ کو دھرنوں ،مخلوط ناچ گانوں اور مخلوط بھنگڑوں میں گزاراانہوں نے کہا کہ عوامی نیشنل پارٹی کے گزشتہ دور حکومت کے پانچ سالہ دور میں صوبہ میں 10نئی یونیورسٹیاں اور 9نئے کیمپس قائم کئے گئے ہیں اس سے پہلے گزشتہ 61سالوں کے دوران صوبہ میں صرف 9یونیورسٹیاں بنائی گئیں اسی طرح متعدد ہسپتالوں کو اپگریڈ کیا گیا انہوں نے کہا کہ ہمارے شروع کردہ میگا پراجیکٹ میں بعض منصوبوں کی تکمیل میں موجودہ حکومت ٹال مٹول سے کام لے رہی ہے جن کی افادیت سے صوبہ کے عوام تاحال محروم ہیں ۔

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...