مظفرآباد،حکومت،محکمہ صحت کی بے حسی،ایک اورگھرانہ اجڑگیا

مظفرآباد،حکومت،محکمہ صحت کی بے حسی،ایک اورگھرانہ اجڑگیا

مظفرآباد(بیورورپورٹ)حکومت اور محکمہ صحت کی سفاکی اور بے حسی کے باعث ایک گھرانہ مزید اُجڑ گیا ۔تفصیلات کے مطابق مظفرآباد کے علاقے سنبہ تریڑی کی رہائشی اختر بی بی بیوہ منیر جو کہ اپنے گھر اور یتیم بچوں کا واحد سہارا تھی محکمہ صحت کی بے حسی کسی سے ڈھکی چھپی نہیں ہے کہ وہ لوگ لیڈی ہیلتھ ورکرز سے ڈیوٹی تو پوری کروا لیتے ہیں مگر تنخواہ کے وقت بجٹ نہ ہونے کا رونا روتے ہیں ۔بیوہ اختر بی بی کے ساتھ بھی یہی کچھ ہوا۔عرصہ آٹھ ماہ سے اسے تنخواہ نہ ملی جس کی وجہ سے وہ بچوں کے اسکول کی فیس ادا نہ کر سکی گھر میں فاقے ہونے لگے ان پریشانیوں کے باعث بیوہ اختر بی بی مورخہ 07-10-17کو اپنے چھوٹے چھوٹے بے سہارا بلکتے ہوئے بچوں کو چھوڑ کر خالق حقیقی سے جاملی ۔کیایہی انصاف ہے کہ دوسروں کے بچوں کو صحت کی سہولت دینے والی اختر بی بی اپنے بچوں کو بے سہارا چھوڑکر منوں مٹی تلے چلی گئی ۔حکومت اور محکمہ صحت اختر بی بی کے یتیم و مسکین بچوں کی ذمہ داری اٹھائیں گے یا ایسے ہی بے حسی کی مدہوش کرنے والی دوائی پی کر سوتے رہیں گے ۔ماں کے جنازے کے پاس بیٹھے معصوم بچوں کی آنکھوں میں یہ سوال سب نے پڑھا اور دیکھا ۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر


loading...