جس شخص کی ذاتی زمین نہ ہو،لیززمین سے 10ارب کماتاہے،ایسی صورت میں وہ الیکشن فارم میں کیا لکھے گا؟،چیف جسٹس

جس شخص کی ذاتی زمین نہ ہو،لیززمین سے 10ارب کماتاہے،ایسی صورت میں وہ الیکشن ...
جس شخص کی ذاتی زمین نہ ہو،لیززمین سے 10ارب کماتاہے،ایسی صورت میں وہ الیکشن فارم میں کیا لکھے گا؟،چیف جسٹس

  


اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)جہانگیرترین کی نااہلی کےلئے سپریم کورٹ میں حنیف عباسی کی درخواست کی سماعت،چیف جسٹس کی سربراہی میں 3 رکنی بنچ نے سماعت کی،دوران سماعت چیف جسٹس ثاقب نثار نے جہانگیر ترین کے وکیل سے استفسار کیا کہ جس شخص کی ذاتی زمین نہ ہولیززمین سے 10ارب کماتاہے،ایسی صورت میں وہ شخص الیکشن فارم میں کیا لکھے گا؟۔

وکیل جہانگیرترین کا کہنا تھا کہ ہماراموقف ہے کہ لیز زمین پرٹھیکیدارپرٹیکس لاگونہیں ہوتا،جہانگیرترین نے کاغذات نامزدگی میں کچھ نہیں چھپایا۔

اس پر جسٹس فیصل عرب نے کہا کہ متعلقہ فورم پرزیرالتوامقدمات وفاقی قانون سے متعلق ہیں،ایگری کلچرل ٹیکس کاایشو صوبائی معاملہ ہے،

کیاایگریکلچرل اتھارٹی نے آپ کونوٹس جاری کیا؟۔

جہانگیر ترین کے وکیل سکندر بشیر نے کہا کہ پنجاب ایگری کلچرل اتھارٹی نے کوئی نوٹس جاری نہیں کیا،جہانگیرترین نے ایف بی آرکوزرعی آمدن سمیت مجموعی آمدن بتائی۔

چیف جسٹس میاں ثاقب نثار نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ زرعی زمین پررینٹ آمدن ہوگی،زرعی زمین سے کاشتکاری کاریونیوبھی آمدن ہوگی،لیززمین سے جوریونیوحاصل کرےگاوہ اس کی زرعی آمدن ہوگی۔

یہ بھی  پڑھیں:۔وزیراعظم سے گورنر خیبرپختونخوا کی ملاقات،فاٹا کو قومی دھارے میں شمولیت پر تفصیلی بات چیت

مزید : قومی /اہم خبریں


loading...