اوسٹیوآرتھرائٹس کے مریض اپنا وزن کنٹرول میں رکھیں‘ ڈاکٹر فیصل قمر

اوسٹیوآرتھرائٹس کے مریض اپنا وزن کنٹرول میں رکھیں‘ ڈاکٹر فیصل قمر

  



لاہور(پ ر)کنسلٹنٹ آرتھو پیڈک سرجن شوکت خانم میموریل کینسر ہسپتال اور ریسرچ سنٹر ڈاکٹر فیصل قمر نے کہا ہے کہ اوسٹیوآرتھرائٹس کے مریض اپنا وزن کنٹرول میں رکھیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان سمیت دنیا بھر میں ہر سال 12 اکتوبر کو جوڑوں کے درد کی بیماری سے بچاؤ اور آگاہی کا عالمی دن منایا جاتا ہے۔ جوڑوں کا درد یا گھنٹیا ایک ایسی بیماری ہے جس کے نتیجے میں انسانی جسم کے جوڑوں کے اطراف موجود بافتوں پر منفی اثرات مرتب ہوتے ہیں جس سے بدن کے مختلف جوڑوں پر سوزش ہو جاتی ہے اور شدیددرد بھی ہوسکتا ہے۔ گھنٹیا یوں تو جسم کے کسی بھی جوڑ کو متاثر کر سکتا ہے لیکن خاص طور پر گھٹنے، کولہے ،کندھے اور ریڑھ کی ہڈی اس سے زیادہ متائثر ہو سکتی ہیں گھنٹیا کی مختلف اقسام کی مختلف وجوہات ہو سکتی ہیں۔ ان میں کسی حادثے کے نتیجے میں چوٹ لگنا، بڑھتی عمر ،موٹاپا، کمزور پٹھے میٹا بولک نظام کی خرابی، بیکٹریل اور وائرل انفیکشن کے بلواسطہ یا بلا واسطہ اثرات شامل ہیں۔گھنٹیا کے درد کی عام علامات میں شدید درد، سوجن، جوڑوں میں افعال انجام دینے کی طاقت گھٹنا اور ان کے حرکت کرنے میں فرق آجانا شامل ہیں۔ ان علامات کے ساتھ بعض مریض بخار، وزن میں تیزی سے کمی اور تھکاوٹ کی شکایت بھی کرتے ہیں۔انہوں نے بتایا کہ شوکت خانم میموریل کینسر ہسپتال اور ریسرچ سنٹر میں ہڈیوں اور جوڑوں کی تما م بیماریوں کے علاج کی سہولت دستیاب ہے۔ ابتداء میں درد کش ادویات ، فزیو تھراپی اور انجکشن کا استعمال کیا جاتاہے ۔ جبکہ بعد کی سٹیج پر گھٹنے اور کولھے کی ہڈیوں کی تبدیلی کا آپریشن بھی کیا جاتا ہے۔ جوڑوں کی تبدیلی کا عمل ہر مریض کی جسمانی ساخت اور تکلیف کے حساب سے مختلف ہوتا ہے اور اگر یہ درست طریقے سے کیا جائے تو کامیابی کے امکانات 95%فیصد تک ہوتے ہیں۔اس حوالے سے شوکت خانم ہسپتال میں فراہم کی جانے والی سہولیات کسی بھی طرح ترقی یافتہ ممالک میں فراہم کی جانے والی سہولیات سے سے کم نہیں ہیں ۔

مزید : کامرس


loading...