پی ٹی سی ایل گروپ کی آمدنی 9 ماہ میں93.21 ارب روپے تک بڑھ گئی

پی ٹی سی ایل گروپ کی آمدنی 9 ماہ میں93.21 ارب روپے تک بڑھ گئی

  



لاہور(پ ر) ملک میںآئی سی ٹی خدمات کی معروف فراہم کنندہ پاکستان ٹیلی کمیونیکیشن کمپنی لمیٹڈ (پی ٹی سی ایل) نے 11 اکتوبر 2018 کو اسلام آباد میں منعقدہ بورڈ آف ڈا ئریکٹر ز کی میٹنگ میں مالی نتائج کا اعلان کیا۔ یہ نتائج 30 ستمبر 2018 کو ختم ہونے والے نو مہینوں پر مشتمل تھے۔ گروپ کمپنیوں کی مجموعی طور پر مثبت کارکردگی کی وجہ سے پی ٹی سی ایل گروپ کی آمدنی سال 2018 کے پہلے 9 ماہ میں 6% YOY ترقی کر کے93.21 ارب روپے تک بڑھ گئی۔ پی ٹی سی ایل گروپ کی سال 2018 کی تیسری سہ ماہی کے دوران QoQ کی آمدنی11% بڑھ گئی ۔ یو فون نے 10% YOY ترقی کی، پی ٹی سی ایل مائیکرو فنانسنگ کے ایک ذیلی ادارے یو بینک نے سال 2017 کی پہلے 9 ماہ کے مقابلے میں 65 % کی شاندارترقی کی ۔ ۔ تاہم مجموعی طور پر پی ٹی سی ایل گروپ کاخالص منافع26% فیصد کمی کا شکار ہوا ۔جس کی بنیادی وجوہات روپے کی قدر میں 1.4 ارب روپے کی کمی اور2.3 ارب روپے کی گزشتہ سال کی مثبت ایڈجسٹمنٹ تھیں ۔ سازگار حالات کی صورت میں پی ٹی سی ایل کا خالص منافع گزشتہ سال کے مقابلے میں 27% زیادہ ہوتا۔ پی ٹی سی ایل کی 9 ماہ میں مجموعی آمدنی مستحکم رہتے ہوئے 52.6 ارب روپے YOY رہی۔ پی ٹی سی ایل کی نمایا ں اور مارکیٹ کی معروف فکسڈ براڈبینڈDSLسروس نے اس ترقی کو جاری رکھا اور2017 ء کے پہلے 9 ماہ کے مقابلے میں آمدنی میں 7%فیصد زیادہ اضافہ حاصل کیا، جس کی وجہ 31 مکمل طور پر ٹرانسفارم کی گےءں ایکس چینجز ہیں جن کی بدولت DSL سروسز نے% 15 YOY ترقی کی۔ کارپوریٹ بزنس نے گزشتہ سال اسی عرصے کے مقابلے میں کلاؤڈ انفراسٹرکچر سروسز، آئی ٹی اور سیکورٹی کے سلوشنز اور مینجڈ سروسز کے لئے نئی شراکت داریوں کے ذریعے% 14نمایاں ترقی کی۔ صارفین کی EVO سے Charji/LTE پر منتقلی نے اس سال مثبت نتائج دکھائے اوردوہرے ہندسوں میں YoY ترقی کی، تاہم گزشتہ سال اسی عرصے کے دوران صارفین کو حاصل کرنے کی لاگت زیادہ رہی۔ ملکی و بین الاقوامی وائس کی آمدنی میں مسلسل کمی آئی جس کی وجہ غیر قانونی ٹیلی کمیونیکیشن کا استعمال ،OTT اور سیلولر سروسز پر منتقلی رہی جس کے نتیجے میں وائس ٹریفک میں کمی واقع ہوئی۔

پی ٹی سی ایل کا آپریٹنگ منافع گزشتہ سال کے مقابلے میں 17% کم رہا جس کی مرکزی وجہ سال کے پہلے 9 ماہ میں کرنسی کی قدر میں کمی ، صارفین کو حاصل کرنے کی لاگت اور کیبل و سیٹیلائٹ / نیٹ ورک کو درست رکھنے کی مالیت میں اضافہ رہی، مزید برآں ،گزشتہ سال کے مقابلے میں کم فنڈز کی وجہ سے نان آپریٹنگ آمدنی میں بھی کمی آئی ۔ ان تمام وجوہات کی بناء پر خالص منافع 4.8ارب روپے رہا جو کہ گزشتہ سال کے مقابلے میں 26% کم ہے ۔ ( اگر ان کو ایک دفعہ ہونے ولی تبدیلیوں کے مطابق ایڈجسٹ کیا جائے تویہ13% کم ہے)،یہ صورت حال آپریٹنگ منافع اور نان آپریٹنگ آمدنی میں کمی کی وجہ سے پیش آئی۔

پی ٹی سی ایل کے مالی استحکام کو حال ہی میں ، ایک آزاد ریٹنگ کے عمل کے تحت سراہا گیا ۔ JCR-VIS نے پی ٹی سی ایل کو طویل المدتی ٹرپل اے ریٹنگ (AAA) دی ہے۔ یہ امرپی ٹی سی ایل سے وابستہ لوگوں کے اعتماد میں اضا فہ کریگا۔

تیسری سہ ماہی کے دورا ن پی ٹی سی ایل نے بلوچستان میں 200,000 مینگرووکے بیجوں کی شجر کاری کے سلسلے میں ڈبلیوڈبلیو ایف پاکستان (WWF Pakistan) کے سا تھ شراکت داری کی۔ پی ٹی سی ایل نے ' سمّٹ پروگرام ' 2018 ( (Summit Programتحت اعلیٰ تعلیمی اداروں سے آئے ہوئے 100 باصلاحیت نوجوان انجینئرز اور بزنس گریجویٹس کو ادارے میں شامل کیا جو کہ مستقبل کے لیے لیڈر شپ تیار کرنے میں مدد کریں گے ۔

مزید : کامرس


loading...