”اس نے مجھے کہا کہ اپنی قمیض اتارو اور پھر ۔۔۔“ نوجوان لڑکی نے پاکستان کے معروف کامیڈین پر شرمناک ترین الزام لگا دیا ، پورے ملک میں کھلبلی مچ گئی

”اس نے مجھے کہا کہ اپنی قمیض اتارو اور پھر ۔۔۔“ نوجوان لڑکی نے پاکستان کے ...
”اس نے مجھے کہا کہ اپنی قمیض اتارو اور پھر ۔۔۔“ نوجوان لڑکی نے پاکستان کے معروف کامیڈین پر شرمناک ترین الزام لگا دیا ، پورے ملک میں کھلبلی مچ گئی

  



لاہو ر (ڈیلی پاکستان آن لائن ) بھارت کے بعد اب ” می ٹو “ مہم نے پاکستان میں بھی ایک مرتبہ پھر اینٹری مار دی ہے ، عبدالستار ایدھی کے بعد ایدھی فاونڈیشن سنبھالنے والے ان کے بیٹے فیصل ایدھی پر بھی ایک خاتون نے مبینہ طور پر جنسی ہراسگی کے الزامات عائد کر دیئے ہیں جبکہ ان کے بعد پاکستان کے معروف کامیڈین ” جنید اکرم “ کیخلاف بھی لڑکیاں میدان میں آ گئیں ہیں اور انہوں نے مزاحیہ اداکار پر سنگین نوعیت کے جنسی ہراسگی اور فریب کے الزامات کی بارش کر دی ہے ۔تاہم کامیڈین کی جانب سے ان تمام الزامات کی تردید کی گئی ہے اور انہوں نے کہا کہ میں اس کے خلاف قانونی چارہ جوئی کروں گا۔

تفصیلات کے مطابق جنید اکرم کے دھوکے میں آنے والی پہلی لڑکی کا کہناہے کہ وہ پہلی مرتبہ جنید اکرم سے ایک آرٹیکل کے باعث واقف ہوئی اور یہ 24 اگست 2014 کی بات ہے جب میرے ساتھ یہ واقعہ پیش آیا ۔لڑکی کاکہناتھاکہ ” میں نے جنید اکرم کو سوشل میڈیا پر فالو کر لیا اور اکثر اوقات ان کی پوسٹ پر کمنٹ بھی کرتی تھی تاہم ایک روز ان کا مجھے میسج آیا کہ آپ مہربانی کر کے میری پوسٹ پر کمنٹ نہ کیا کریں کیونکہ میرے ساتھ کچھ لوگ ایڈ ہیں جو کہ غلط سمجھ بیٹھیں گے ، میں نے کہا کہ ٹھیک ہے میں نہیں کروں گی ۔ تاہم اس کے کچھ دن بعد ان کا مجھے دوبارہ میسج آیا جس میں انہوں نے مجھے سے میرا واٹس ایپ نمبر مانگا اور میں نے انہیں دے دیا ۔ ہم نے ایک یا شائد دو مرتبہ واٹس ایپ پر بات کی جس میں معمول کی باتیں تھیں ۔ لیکن جمعہ کے دن اس کا میسج آیا اور وہ کہنے لگاکہ میں آپ کو دیکھنا چاہتاہوں ، تو میں نے کہا کہ ٹھیک ہے ، آپ جب چاہیں دیکھ سکتے ہیں ، تو اس وقت وہ ملک میں نہیں تھے جس کے باعث انہوں نے کہا کہ ابھی دیکھنا چاہتاہوں ، مطلب آپ سمجھ گئی ہوں گی ۔ لڑکی کا کہناتھا کہ مجھے اس وقت کچھ سمجھ نہیں آئی اور میں نے ان کا اکاﺅنٹ بلاک کر دیا اور انہیں پھر کوئی میسج بھی نہیں کیا ۔“

کامیڈین جنید اکرم کے خلاف ایک اور متاثرہ لڑکی سامنے آئی اور اس کے انکشافات نے تو سوشل میڈیا پر ہنگامہ ہی برپا کر دیاہے اس کا کہناتھا کہ وہ اس وقت گیارویں یا بارویں جماعت کی طالبہ تھی اور جنید اکرم ان کی یونیورسٹی میں دماغی حالت پر تقریر کرنے کیلئے آئے اور وہاں انہوں نے بچپن میں ان کے ساتھ پیش آنے والے جنسی ہراسگی کے واقعے سے پردہ اٹھایا ۔میں نے میسجنر پر ان سے رابطہ کیا یہ سوچ کر کہ یہ بھی میر ی طرح متاثر شخص ہیں ۔ لڑکی کا کہناتھا کہ انہوں نے مجھے اپنے بارے میں تفصیلات بتانی شروع کر دیں ۔ جنید اکرم نے مجھے ویڈیو کال کرنے کیلئے کہا لیکن میں نے کہا ویڈیو کال رہنے دیں لیکن انہوں نے بہت زیادہ قائل کرنے کی کوشش کی اور وہاں انہوں نے مجھ سے میرے ساتھ پیش آنے والے واقعات کے بارے میں پوچھا کہ کس طرح میرے کزن نے مجھے جنسی طور پر ہراساں کیا ۔اس وقت وہ بہت ہی زیادہ رحم دل تھے اور انہوں نے مجھ سے میرے گھر کا پتا پوچھا اور دیگر معلومات بھی حاصل کیں ۔تاہم اس کے تین مہینے بعد تک ہماری آپس میں کوئی بات چیت نہیں ہوئی ۔ اس کے بعد ہماری یونیورسٹی میں ایک اور تقریب کا انعقاد کیا گیا تو میں نے انہیں ایک مرتبہ پھر سے مدعو کرنے کیلئے ان سے رابطہ کیا ۔اور اس وقت انہوں نے میرے ساتھ فلرٹ کرنا شروع کر دیا اور میرے ساتھ قابل اعتراض گفتگو شروع کر دی ۔ جنید اکرم نے مجھے ویڈیو کال پر مکمل طور پر برہنہ ہونے کیلئے کہا اور جب میں نے انکار کر دیا تو انہوں نے مجھے دھمکی دی کہ وہ میری پوری کہانی کے بارے میں ویڈیو بنائیں گے اور اسے میرے والدین کو بھی بھیجیں گے کہ کس طرح میرے کزن نے مجھے جنسی طور پر ہراساں کیا اور دیگر چیزیں بھی ۔ لڑکی کا کہناتھا کہ میں ڈر گئی اور میں نے اپنی قمیض اتارنے پر رضامندی ظاہر کر دی اور جب میں نے آدھا لباس اتار دیا تو وہ ابھی بھی زور ڈال رہا تھا کہ مکمل برہنہ ہو جاو ۔تاہم اتنی دیر میں میری بہن اندر کمرے میں آ گئی اور میں اس وقت رورہی تھی ، اور اس نے مجھ سے پوچھا کہ تم اپنے اپنی قمیض کیوں اتاری ہوئی ہے اور میں نے سب کچھ اسے بتا دیا ۔میری بہن نے مجھے کہا کہ اسے دوبارہ کال کرو اور میری بہن نے جنید اکرم کو دھمکی دی کہ وہ اسے سوشل میڈیا پر ذلیل کر دے گی لیکن انہوں میری برہنہ ویڈیوز بنا لی تھیں ۔ میں نے اسی وقت ہمارے درمیان ہونے والی ساری گفتگو کو ڈیلیٹ کر دیا ۔

جنید اکرم کے خلاف  اعلانیہ سامنے آنے سے ڈرنے والی لڑکی نے اپنا ایک جعلی اکاﺅنٹ بنایا اور اپنے ساتھ پیش آنے والے جنسی ہراسگی کے معاملے کو سوشل میڈیا پر اجاگر کیا ۔لڑکی کا کہناتھا کہ مجھے اپنے اصلی پروفائل سے سامنے آنے میں ڈر لگتاہے کیونکہ انہوں نے مجھے کئی مرتبہ دھمکیاں بھی دی ہیں ۔ لڑکی نے انکشاف کیا کہ جنید اکرم میں کئی مقامات پر میرے ساتھ بدتمیزی کی اور زبردستی خود کو مجھ پر مسلط کیا ۔جنید اکرم نے مجھ سے اپنی بیوی کے بارے میں بھی چھپایا اور انتہائی محفوظ طریقے سے مجھے اپنے جال میں پھنسایا لیکن مجھے کچھ عرصہ بعد ان کی بیوی کے بارے میں معلوم ہوگیا جو کہ طلاق یافتہ تھی ، جنید ان کے دو بچوں کا سوتیلا باپ ہے ۔لڑکی کا کہناتھا کہ ہمارے درمیان جو بھی ہوا وہ زور اور زبردستی کے بغیر ہوا ، کیونکہ مجھے بالکل بھی ان کی شادی کے بارے میں معلوم نہیں تھا تاہم انہوں نے میرے ساتھ تعلقات رکھ کر اپنی بیوی کو بھی دکھوکے میں رکھا اور مجھے بھی اندھیرے میں رکھا ۔لڑکی کا کہناتھا کہ جب ساری حقیقت مجھ پر آشکار ہو گئی تو اس نے زبردستی میرا بوسہ لینے کی کوشش کی جس پر میں نے اس کے منہ پر تھپڑ دے مارا ۔

یہاں یہ امر بھی قابل ذکر ہے کہ جنید اکرم نے لڑکیوں کی جانب سے لگائے جانے والے الزامات کو مسترد کر دتے ہوئے انہیں جھوٹے اور بے بنیاد قرار دیا ہے ۔جنید اکرم کا کہناتھا کہ میں اس حوالے سے اپنی قانونی ٹیم سے مشاورت کر رہاہوں اور قانون کے درائرے میں رہتے ہوئے ان الزامات کے خلاف قانونی چارہ جوئی کروں گا ۔

مزید : ڈیلی بائیٹس