طالبان کی جانب سے ریڈ کراس کو افغانستان میں امدادی کام کرنے کی اجازت

طالبان کی جانب سے ریڈ کراس کو افغانستان میں امدادی کام کرنے کی اجازت
طالبان کی جانب سے ریڈ کراس کو افغانستان میں امدادی کام کرنے کی اجازت

  



واشنگٹن(این این آئی)طالبان نے اعلان کیا ہے کہ وہ ریڈ کراس کی بین الاقوامی کمیٹی کو افغانستان میں پھر سے پورے طور پر اپنا کام سنبھالنے کی اجازت دیں گے، جس کے لیے وہ تحفظ کی ضمانت دیں گے، جسے چند ہفتے قبل ختم کیا گیا تھا۔اسلام نواز سرکش گروپ نے اگست میں ضمانتیں واپس لے لی تھیں یہ الزام لگاتے ہوئے کہ امداد فراہم کرنے والا گروپ افغان قیدخانوں میں حراستی صورت حال کی نگرانی کرنے اور طالبان قیدیوں کو طبی امداد فراہم کرنے کی ذمے داری میں ناکام رہا ہے۔

غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق طالبان ترجمان، ذبیح اللہ مجاہد نے کہا کہ قطر میں اْن کے سیاسی گفت و شنید کرنے والوں اور ریڈ کراس کی بین الاقوامی کمیٹی کے اہلکاروں کے درمیان بات چیت کے نتیجے میں یہ فیصلہ کیا گیا ہے کہ افغانستان میں کام کرنے والے ریڈ کراس کے عملے کو محفوظ راستہ دیا جائے۔ باغی گروپ کا خلیجی ریاست میں سیاسی دفترقائم ہے۔ریڈ کراس کے ترجمان نے اس بات کی تصدیق کی کہ دونوں فریق نے سکیورٹی کے معاملے پر سمجھوتا طے کیا ہے۔ تاہم، اْنھوں نے مزید تفصیل بیان نہیں کی۔

مزید : بین الاقوامی


loading...