کراچی میں پہلی مشاورتی ورکشاپ، حج پالیسی 3سال کیلئے بنانے کا پروگرام ہے 

کراچی میں پہلی مشاورتی ورکشاپ، حج پالیسی 3سال کیلئے بنانے کا پروگرام ہے 

لاہور(ڈویلپمنٹ سیل)وزارت مذہبی امور اور ہوپ کے زیر اہتمام حج2020ء کی تیاریوں کے سلسلے میں کراچی میں پہلی مشاورتی حج ورکشاپ، وفاقی وزیر مذہبی امور پیر نور الحق قادری،وفاقی سیکرٹری میاں مشتاق احمد،جوائنٹ سیکرٹری زینت حسین بنگش،ڈپٹی سیکرٹری انعام الرحمن،ڈپٹی سیکرٹری عمران رشید،سیکشن آفسرعظمت خان،ڈپٹی ڈائریکٹر جمیل الرحمن کی خصوصی شرکت،ہوپ سندھ کے چیئرمین نذیر احمد،ممبر ایگزیکٹو محمد یوسف پیروانی،سابق چیئرمین محمد سعیدسمیت کراچی کے حج آرگنائزر،علماء کرام،سرکاری اور پرائیویٹ سکیم کے حجاج کی بڑی تعداد میں شرکت،ڈائریکٹر حج کراچی قاضی سمیع الرحمن نے میزبانی کے فرائض انجام دئیے،ڈپٹی سیکرٹری انعام الرحمن نے خطبہ استقبالیہ پیش کیا،وفاقی وزیر مذہبی امورپیر نور الحق قادری نے حج2019ء کے کامیاب حج آپریشن پر اظہارتشکر کرتے ہوئے حج2020ء کے لیے اسلام آباد کے بعد دیگر بڑے شہروں سے روڑ ٹو مکہ پروگرام شروع کرنے کی خوشخبری سنائی اور کہا کہ حج پالیسی3سال کے لیے بنانے کا پروگرام ہے تاکہ مکہ مکرمہ میں بہتر اور اچھی عمارتیں 3سال کے لیے حاصل کر سکیں،وفاقی وزیر نے کہا کہ سرکاری اور پرائیویٹ سکیم دونوں کو مزید بہتر بنانے کے لیے تجاویز حاصل کرنے کے لیے ملک بھر میں مشاورتی حج ورکشاپ کا انعقاد شروع کیا جا رہا ہے،ہوپ کے سابق چیئرمین محمد سعید نے پرائیویٹ حج سکیم کی نمائندگی کرتے ہوئے حج2019ء کی کامیابی پر اللہ کا شکر ادا کرتے ہوئے پرائیویٹ حج سکیم کی مزید بہتری کے لیے حج آرگنائزر کو مستقل رجسٹرڈ کرنے کی تجویز پیش کی اور ساتھ ہی حج2020ء  کے لیے سعودیہ سے مزید حج کوٹہ کے حصول کا مطالبہ کیا اور کہا کہ حج2020ء میں سرکاری سکیماور پرائیویٹ سکیم کی تقسیم پچاس پچاس فیصد کے حساب سے کی جائے،انہوں نے کہا کہ50کوٹہ والوں کی مشکلات بڑھ گئی ہیں ان کا کوٹہ 100کیا جائے،مانیٹرنگ کے نظام کو حج پیکج تک محدود رکھا جائے،حج کے دوران کھانا صرف عزیزیہ میں لازم رکھا جائے،مکہ،مدینہ ہوٹل میں کھانا آپشنل کیا جائے،5فیصد بنک گارنٹی کی بجائے HCFفنڈ کو گارنٹی تسلیم کیا جائے، مشاورتی حج ورکشاپ سے حجاج کرام نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ سرکاری حج سکیم کے دو پیکج بنائے جائیں ایک حرم کے نزدیک اور دوسرا حرم سے دور رکھا جائے،سرکاری سکیم کے حجاج کے لیے تربیتی نظام کو بہتر بنایا جائے،سرکاری سکیم کے لیے مکتب اولڈ منیٰ میں حاصل کیے جائیں۔  

وفاقی وزیر مذہبی امور

مزید : صفحہ آخر


loading...