زبردستی دکانیں خالی کرانیکی کوشش‘ دکاندار‘ میونسپل کمیٹی عملہ آمنے سامنے‘ کشیدگی میں اضافہ

  زبردستی دکانیں خالی کرانیکی کوشش‘ دکاندار‘ میونسپل کمیٹی عملہ آمنے ...

رحیم یارخان(بیورو رپورٹ) میونسپل کمیٹی رحیم یار خان کے عملہ نے وزیر اعلی پنجاب اور اے ڈی سی آر کے احکامات ہؤا میں اڑا دیئے، زبردستی دوکانیں خالی کروانے کیلئے میونسپل کمیٹی عملے نے دوکانداروں پر تشددکیا، لڑائی میں 4 دوکاند زخمی اور علاقہ میدان جنگ بن گیاتفصیل کے مطابق سکول بازار میں واقع متنازعہ دکانیں زبردستی خالی کروانے کے لیے میونسپل کمیٹی عملہ نے دوکانداروں کو تشدد کا نشانہ بنایا ہے جس کی فوٹیج بھی منظر عام پر آگئی جس میں عملے کو دوکاندار سے جھگڑا کرتے ہوئے واضح طور پر(بقیہ نمبر40صفحہ12پر)

دیکھا جا سکتا ہے اسی واقع کی اطلاع ملتے اسسٹنٹ کمشنر، پولیس بھاری نفری کے ہمراہ موقع پر پہنچ گئے اور دوکانداروں نے بتایا کہ یہ دوکانیں خالی نہیں کروائی جاسکتی کیونکہ ان کے پاس وزیر اعلیٰ پنجاب کے احکامات اور اے ڈی سی آر کا حکم نامہ موجود ہے جسکو میونسپل کمیٹی عملہ نے دیکھنے اور ماننے سے انکار کردیا ہے، جسکے بعد دوکانداروں نے عدم اطمینان ظاہر کرتے ہوئے احتجاج کیا اور ڈی سی آفس کا گھیراؤ کر لیا جسکے بعد ضلعی انتظامیہ کی جانب سے میونسپل کمیٹی عملہ کے خلاف کارروائی کا حکم دے دیا اور تاجر برادری تھانہ سٹی اے ڈویثرن پہنچ گئی جہاں پر زخمی دوکاندار اور تاجر برادری کے بیان پر عملے کے خلاف کارروائی شروع کردی گئی ہے۔ متاثرہ دوکانداروں عامر، میاں عمیر،عبدالقیوم، وھاب وغیرہ نے کاغذات دکھاتے ہوئے بتایا کہ 2007میں وزیر اعلی پنجاب نے رحیم یار خان کی دیہہ اراضی کو مالکان حقوق دینے کا فیصلہ کیا جس پر 2016میں ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر کی عدالت میں سماعت کے دوران 470کنال اراضی دیہہ ملکیت ہے اور اس کے حوالے سے میونسپل کمیٹی کسی بھی قسم کے اراضہ ملکیت کے ثبوت پیش نہ کر سکی جس پر اے ڈی سی آر شوزب سعید نے میونسپل کمیٹی کے خلاف فیصلہ دیا کہ یہ اراضی دیہہ ملکیت ہے جس پر میونسپل کمیٹی نے دوکانیں تعمیر نہ کر کے دی ہیں اور اب تک تہہ بازاری کے تحت کرایہ وصول کر رہی ہے ملکیت میونسپل کمیٹی کی نہ ہے جس پر دوکانداروں کو مالکانہ حقوق فراہم کیئے جائیں۔گزشتہ روز میونسپل کمیٹی نے اپنے اختیارات کا ناجائز استعمال کرتے ہوئے سکول بازار کی دوکانیں سیل کرنے کی کوشش کی جس پر دوکانداروں نے مزحمت کی تو میونسپل کمیٹی کے عملہ نے دوکانداروں پر تشدد کیا۔جس کے نتیجہ میں 4دوکاندار اور دو میونسپل عملہ کے اہلکار زخمی ہوگے جبکہ میونسپل کمیٹی نے دو دوکانداروں کو تھانہ اے ڈویژن میں گرفتار کروا رکھا ہے اور کار سرکار میں مداخلت کرنے کا مقدمہ درج کروانے کے درخواست دائر کر دی ہے۔ دوکاندارں نے احتجاجی مظاہرہ کیا اور میونسپل کمیٹی کے خلاف مرد بادکے نعرے لگائے اور وزیر اعظم عمران خان، وزیر اعلی پنجاب عثمان بزدا ر، سیکرٹری کالونی سے نوٹس لے کر کاروائی کا مطالبہ کیا ہے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...