ماحولیاتی قوانین کی پابندی کرنا بلاامتیاز سب پر لازم ہے : مرتضی وہاب

ماحولیاتی قوانین کی پابندی کرنا بلاامتیاز سب پر لازم ہے : مرتضی وہاب

کراچی(اسٹاف رپورٹر)حکومت سندھ کے ترجمان اور صوبائی مشیر برائے قانون, ماحولیات, موسمیاتی تبدیلی اور ساحلی ترقی مرتضی وہاب نے کہا ہے کہ ماحولیاتی قوانین کی پابندی کرنا بلا تفریق تمام نجی، نیم سرکاری،سرکاری اور خود مختار اداروں پر لازم ہے تاکہ صنعتی، ادارہ جاتی،معاشرتی اور اقتصادی ترقی کا پہیہ قدرتی ماحول کو کسی قسم کا نقصان پہنچائے بغیر بدستور چلتا رہے۔یہ بات انہوں نے کچھ وفاقی اداروں کی جانب سے سندھ کے ادارہ تحفظ ماحولیات سے ماحولیاتی نگرانی کرانے میں ٹال مٹول کرنے کی شکایات کے جواب میں کہی۔مشیر ماحولیات کا کہنا تھا کہ کسی بھی قسم کی ترقیاتی، تعمیری یا دفتری سرگرمی صوبہ سندھ میں خواہ کوئی نجی ادارہ کرے یا وفاقی یا صوبائی ادارہ اسے اپنی سرگرمیوں کے دوران تمام ماحولیاتی تقاضوں کو ملحوظ خاطر رکھنا ہوگا۔مرتضی وہاب نے مزید کہا کہ ادارہ تحفظ ماحولیات سندھ کی مانیٹرنگ ٹیموں کو کسی بھی ادارے کی جانب سے اپنی سرگرمیوں کی ماحولیاتی نگرانی کی اجازت نہیں دینے کی حوصلہ شکنی کی جائے گی تاہم کسی قسم کی ناچاقی پیدا کئے بغیر ہماری کوشش ہوگی کہ تمام سرگرمیوں کی ماحولیاتی نگرانی بلا تفریق کی جائے اور ترقی کی خاطر نہ ماحولیاتی تحفظ پر کوئی سمجھوتہ کیا جائے اور نہ ہی ماحولیات کی آڑ میں ترقی کی راہ میں کوئی رکاوٹ ڈالی جائے۔انہوں نے وضاحت کرتے ہوئے کہا کہ ماحولیاتی آلودگی کی روک تھام کے لیے سندھ حکومت جو اقدامات لے رہی ہے ان کا مقصد ترقی کی سرگرمیوں کی حوصلہ شکنی کرنا ہرگز نہیں بلکہ ترقی کی ہر سرگرمی کو پائیدار ترقی میں تبدیل کرنا ہے تاکہ ہماری آئندہ نسلوں کو ترقی کے حقیقی ثمرات حاصل ہوسکیں۔آخر میں انہوں نے محکمہ ماحولیات, موسمیاتی تبدیلی اور ساحلی ترقی اور ادارہ تحفظ ماحولیات حکومت سندھ کے افسران اور عملے کو یکساں جانفشانی اور تندہی سے اپنے فرائض منصبی کی بجا آوری کی تاکید کی تاکہ صوبہ سندھ کا قدرتی ماحول ہر قسم کے خطرات سے محفوظ رہے.

مزید : صفحہ اول


loading...