نواز شریف نے ہدایت کی ہے کہ حکومت کے خاتمے کی مہم شروع کی جائے ، احسن اقبال

نواز شریف نے ہدایت کی ہے کہ حکومت کے خاتمے کی مہم شروع کی جائے ، احسن اقبال
 نواز شریف نے ہدایت کی ہے کہ حکومت کے خاتمے کی مہم شروع کی جائے ، احسن اقبال

  


لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن )مسلم لیگ ن کے جنرل سیکریٹری احسن اقبال نے کہاہے کہ نواز شریف کی خواہش ہے کہ پارٹی اجلاس کے بعد مولانا فضل الرحمان سے ملاقات کر کے آزادی مارچ کے پروگرام کو حتمی شکل دے اور حکومت خاتمے کی مہم شروع کی جائے۔

مسلم لیگ ن کے مشاورتی اجلاس کے بعد احسن اقبال نے میڈیا کو بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ کل نواز شریف نے آزادی مارچ میں شرکت کی ہدایت کی تھی،نواز شریف نے پارٹی کی حکمت عملی کے حوالے سے شہباز شریف کو خط لکھا تھا، مشاورتی اجلاس میں شہباز شریف نے نواز شریف کے خط کے مندرجات پڑھ کر سنائے ،نواز شریف کی خواہش ہے کہ پارٹی اجلاس کے بعد مولانا فضل الرحمان سے ملاقات کر کے آزادی مارچ کے پروگرام کو حتمی شکل دے،نواز شریف نے آزادی مارچ کے مقاصد سے اتفاق کیا ہے،مہنگائی، لاقانونیت اور دیگر مسائل ہو رہے ہیں،5 سال ہم نے ابھرتے ہوئے پاکستان کی بنیاد رکھی لیکن اس حکومت نے اسے ڈوبتی ہوئی اور خیراتی معیشت بنا دی ہے۔

انہوں نے کہا کہ صوبائی حکومتیں ناکام ہو چکی ہیں،ڈینگی نے سارے ملک کو اپنی لپیٹ میں لے رکھا ہے،وزیراعظم ایران اور سعودی عرب کی صلح کروانے چلے ہیں لیکن کیا آپ نے کشمیر کا مسئلہ حل کر لیا ہے؟وزیراعظم بہانے بہانے سے بیرون ممالک کے دورے کر رہے ہیں،آج ہم سفارتی سطح پر تنہا ہو چکے ہیں،پاکستان او آئی سی کا اجلاس تک نہیں بلا سکا،نواز شریف نے کہا ہے کہ حکومت سے نجات کے لئے مہم شروع کی جائے۔

احسن اقبال کا کہنا تھا کہ پارٹی نے نواز شریف کے خط کے مندرجات سے مکمل اتفاق کیا ہے،اتوار کو مولانا سے ہماری پارٹی کا وفد ملاقات کر کے آزادی مارچ کی حکمت عملی ترتیب دے گا۔انہوں نے کہا کہ گزشتہ پارٹی اجلاس کے حوالے سے میڈیا پر مختلف خبریں چلائی گئیں،صرف پارٹی صدر، جنرل سیکرٹری اور سیکرٹری اطلاعات پارٹی کا پالیسی بیان دے سکتے ہیں،ان کے علاوہ کسی کا بھی بیان اس کا ذاتی بیان ہو سکتا ہے، پارٹی کا بیان نہیں ہو سکتا۔سینئر صحافی کا ٹویٹ بے بنیاد ہے،شہباز شریف نواز شریف کے اعتماد اور جنرل کونسل کے اعتماد سے صدر منتخب ہوئے۔وہ پارٹی کے صدر ہیں اور رہیں گے،پارٹی میں کوئی تقسیم نہیں ہے بلکہ سب ایک ہیں۔نواز شریف کا نظریہ اور ان کی قیادت پر سب کارکن اور عہدیدار مکمل اعتماد اور یقین رکھتے ہیں،نواز شریف نے پارٹی کو ڈرائنگ روم سے نکال کر عوام کی پارٹی بنایا،پارٹی میں مختلف رائے ضرور ہوتی ہے لیکن افواہ سازی کی فیکٹریاں بند ہونی چاہئیں۔انہوں نے کہا کہ ذاتی بیماری کو متنازعہ بنایا جاتا ہے جو لمحہ فکریہ ہے،شہباز شریف کو کمر کی تکلیف کا پرانا مسئلہ ہے،آزادی مارچ کی قیادت مولانا فضل الرحمان کر رہے ہیں۔انہوں نے کہااپوزیشن جماعتیں اس مارچ کی حمایت کر رہی ہیں اور اپنے اپنے پروگرام کے مطابق شرکت کر رہی ہیں۔مولانا فضل الرحمان کی مشاورت سے آزادی مارچ کا حتمی پروگرام تشکیل دیا جائے گا۔نواز شریف کے خط کے مطابق ان کے حکم پر پارٹی 100 فیصد عملدرآمد کرے گی۔آزادی مارچ میں پارٹی کی سربراہی کا کوئی جھگڑا نہیں ہے۔

مزید : قومی


loading...