سی ایس ایس کی طالبہ کو عملے نے چلتی ٹرین سے دھکا دے دیا، انتہائی افسوسناک تفصیلات

سی ایس ایس کی طالبہ کو عملے نے چلتی ٹرین سے دھکا دے دیا، انتہائی افسوسناک ...
سی ایس ایس کی طالبہ کو عملے نے چلتی ٹرین سے دھکا دے دیا، انتہائی افسوسناک تفصیلات
کیپشن:    سورس:   Twitter/@Sweetie_pie111

  

ٹنڈو آدم (ڈیلی پاکستان آن لائن) ٹنڈو آدم ریلوے سٹیشن پر طالبہ کو ٹرین سے دھکا دینے کے معاملے کا ریلوے کے اعلیٰ حکام نے نوٹس لیتے ہوئے ڈی سی او ریلوے کی سربراہی میں انکوائری کمیٹی قائم کردی۔ ڈی سی او ریلوے ناصر نذیر کے مطابق سٹاف نے طالبہ کو دھکا نہیں دیا ، طالبہ اور ریلوے سٹاف میں معمولی تلخ کلامی ہوئی تھی۔ طالبہ کے والد جاوید خود ریلوے ملازم ہیں۔

دوسری جانب سی ایس ایس کی طالبہ کا کہنا ہے کہ جمعرات کو ٹنڈو آدم ریلوے سٹیشن پر ایس ٹی منظور نے اس کا بازو مروڑا اور اسے ٹرین سے دھکا دیا۔ طالبہ کے مطابق جلدی میں ٹرین میں سوار ہوتے ہوئے ٹکٹ نہیں لے سکی کیونکہ اگر ٹکٹ لیتی تو ٹرین نکل جاتی۔ اس نے ایس ٹی منظوراور ریلوے منیجر عابد کو  اپنی مجبوری بتائی تھی۔

نجی ٹی وی اے آر وائی نیوز کے مطابق طالبہ نے بتایا کہ اس نے ایس ٹی منظور کو 500 روپے اور ریلوے کارڈ دیا ۔ ٹکٹ اور ریلوے کارڈ کی واپسی کا تقاضہ کیا تو اس نے کہا کہ دیتے ہیں۔ جب ٹنڈو آدم ریلوے سٹیشن آیا تو ایس ٹی منظور نے ٹرین سے اترنے کا کہا ، جب منع کیا تو اس نے ہاتھ مروڑا اور دھکا دے دیا۔ واقعہ پیش آنے پر دیگر مسافروں نے ٹرین کو روک کر احتجاج شروع کردیا جس پر ایس ٹی منظور فرار ہوگیا۔

خیال رہے کہ طالبہ کو ٹرین سے دھکا دینے کا واقعہ ٹنڈو آدم ریلوے سٹیشن پر جمعرات کو پیش آیا تھا۔ طالبہ کو تیز گام ٹرین سے دھکا دیا گیا تھا۔

مزید :

علاقائی -سندھ -سانگھڑ -